کمشیر: قتل کے الزام میں برطانوی گرفتار

ملزم کے والدین برسوں پہلے کشمیر چھوڑ کر برطانیہ چلے گئے تھے

پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں پولیس کا کہنا ہے کہ اس نے ایک کشمیری نژاد برطانوی شہری کو دوہرے قتل کے الزام میں گرفتار کیا ہے ۔

قتل کا یہ واقعہ بدھ کو پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے جنوبی ضلع میرپور کے گاؤں گڑا ناون میں پیش آیا۔

مقای پولیس سٹیشن کے انچارج چوہدری عنصر علی نے بی بی سی کو بتایا کہ تئیس سالہ ملزم ساجد حسین نے اپنے قریبی عزیز محمد ایوب اور عابد حسین کو اپنے گھر بلایا اور ان کو پستول سے گولیاں مار کر قتل کیا۔

ان کا کہنا ہے کہ محمد ایوب کو ایک گولی لگی تھی جبکہ ان کے ساتھی کو تین سے چار گولیاں لگی تھیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ملزم کو یہ تاثر تھا کہ ان کے عزیز نے ان کی زمین کو اپنی زمین ظاہر کرکے حکومت سے اس کا معاوضہ لیا تھا۔

ملزم کے عزیز محمد ایوب ریٹائرڈ سرکاری ٹیچر تھے جبکہ ان کے ساتھی عابد حسین ایک ٹریوِل ایجنسی چلاتے تھے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم نے عابد حسین سے برطانیہ کا ٹکٹ بھی لیا تھا لیکن ابھی ادائیگی نہیں کی تھی۔

پولیس کے مطابق ابھی یہ واضح نہیں ہے کہ ملزم نے ٹریوِل ایجنسی کے مالک کو کیوں قتل کیا۔

پولیس نے بتایا کہ ملزم نے ان دونوں افراد کو قتل کرکے ان کے پاس موجود ایک لاکھ سے زیادہ روپے اور کوئی ڈھائی سو برطانوی پاونڈز کے علاوہ موبائل ٹیلفون بھی اپنے پاس رکھ لیے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے ملزم کو گرفتار کرلیا ہے اور اس سے آلہ قتل اور مقتولین کی رقم اور موبائل فون بھی برآمد کئے ہیں۔ ملزم پندرہ روز کے لیے پولیس کی ریمانڈ میں ہے۔

ملزم کے والدین برسوں پہلے میرپور سے برطانیہ چلے گئے تھے اور وہ برمنگھم میں رہتے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم برمنگھم میں ہی پیدا ہوا ہے اور وہ تواتر سے اپنے آبائی گاؤں آتا رہا ہے اور یہ کہ اس بار وہ چند ہفتے پہلے اپنے والد کے ہمراہ اپنے گاؤں آیا تھا۔