نصرت بھٹو ریفرنس داخل دفتر

بیگم نصرت بھٹو
Image caption اطلاعات کے مطابق بیگم نصرت بھٹو کئی سالوں سے الزائمرز کی مریض ہیں

لاہور کی احتساب عدالت نے پاکستان کے سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کی بیوہ بیگم نصرت بھٹو کے خلاف غیر قانونی اثاثے بنانے کے الزام میں دائر ریفرنس کو ایک مرتبہ پھر داخل دفتر کر دیا ہے۔

عدالت نے یہ حکم نصرت بھٹو کے وکلا کی اس درخواست پر دیا جس میں کہا گیا تھا کہ نصرت بھٹو بیرون ملک ہیں اور شدید علیل ہونے کی وجہ سے عدالت میں پیش نہیں ہو سکتیں، اس لیے ان کے خلاف ریفرنس پر کارروائی روک دی جائے۔

اس ضمن میں نصرت بھٹو کے وکلا نے عدالت کے سامنے ان کا میڈیکل سرٹیفکیٹ بھی پیش کیا۔ یہ دوسرا موقع ہے جب احتساب عدالت نے نصرت بھٹو کے خلاف ریفرنس کو داخل دفتر کیا ہے۔

اس سال جنوری میں جب ریفرنس پر سماعت شروع ہوئی تو عدالت کی طرف سے وکلا کو یہ ہدایت کی گئی تھی کہ وہ نصرت بھٹو کی بیماری کے بارے میں میڈیکل سرٹیفکیٹ عدالت میں پیش کریں۔

عدالت نے وکیل کے موقف کی بنا پر نصرت بھٹو کے خلاف ریفرنس کو فنی بنیادوں پر داخل دفتر کر دیا۔

لاہور سے نامہ نگار عبادالحق کا کہنا ہے کہ یہ ریفرنس نصرت بھٹو کے خلاف سنہ انیس سو ستانوے میں نواز شریف کے دورِ حکومت میں قومی احتساب بیورو نے دائر کیا تھا جس میں یہ الزام لگایا گیا کہ بیگم نصرت بھٹو کے برطانیہ، فرانس اور سوئٹزرلینڈ میں ڈیڑھ ارب امریکی ڈالرز (سو ارب روپے سے زیادہ) کے غیر قانونی اثاثے ہیں۔

نصرت بھٹو اس ریفرنس کی سماعت کے سلسلے میں کبھی عدالت میں پیش نہیں ہوئی تھیں اور احتساب عدالت نے نصرت بھٹو کو دانستہ روپوشی کے الزام میں اٹھارہ نومبر سنہ دو ہزار کو دو سال قید اور ان کی جائیداد کی ضبطی کی سزا سنائی تھی جب کہ ریفرنس داخل دفتر کر دیا تھا۔

نومبر دو ہزار سات میں جب اس وقت کے صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف نے قومی مفاہمتی آرڈیننس یا این آر او جاری کیا تو بینظیر بھٹو اور آصف علی زرداری کے وکیل میاں جہانگیر مرحوم نے اس ریفرنس کو ختم کرنے کی درخواست دی تھی جس پر پانچ سال کے بعد اس ریفرنس پر دوبارہ کارروائی ہوئی تھی۔

عدالت نے میاں جہانگیر ایڈووکیٹ مرحوم کی درخواست پر نصرت بھٹو کے خلاف ریفرنس کو این آر او کی بنیاد پر تیس مئی سنہ دو ہزار آٹھ کو ختم کر دیا تھا۔ سپریم کورٹ کی طرف سے این آر او کو کالعدم قرار دینے کے فیصلے کی روشنی میں اس ریفرنس پر اس سال بارہ جنوری کو دوبارہ کارروائی شروع کی گئی اور عدالت نے یہ ہدایت کی کہ نصرت بھٹو کی بیماری کے بارے میڈیکل سرٹیفکیٹ عدالت میں پیش کیا جائے۔

اسی بارے میں