میر علی: ڈرون حملے میں سات ہلاک

پا کستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک مبینہ امریکی ڈرون حملےمیں کم سے کم سات افراد ہلاک اور چار زخمی ہوگئے ہیں۔

شمالی وزیرستان میں ایک سرکاری اہلکار نے بی بی سی کو بتایا یہ واقعہ سنیچر کی صبح نو بجکر پینتالیس منٹ پر شمالی وزیرستان کے صدر مقام میرانشاہ سے تقریباً پچیس کلومیٹر دور مشرق کی جانب تحصیل میرعلی کے علاقے حیدر خیل میں اس وقت پیش آیا جب ایک مُبینہ امریکی جاسوس طیارے نے ایک مکان کو نشانہ بنایا۔

سرکاری اہلکار کے مطابق اس حملے کے نتیجے میں سات افراد ہلاک جبکہ چار زخمی ہوگئے ہیں۔اہلکار کے مطابق زیادہ تر غیرملکی ہیں اور چند ایک مقامی جنگجو بھی بتائے جاتے ہیں۔لاشوں اور زخمیوں کو مقامی طالبان نے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے۔ ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

شمالی وزیرستان میں ایک سرکاری اہلکار نے پشاور میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار دلاور خان وزیر کو بتایا کہ حملے میں مکان کے دو کمرے مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہیں جبکہ چند دوسرے کمروں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔انہوں نے کہا کہ جاسوس طیارے سے ایک میزائل داغا گیا۔

مقامی لوگوں کے مطابق سنیچر کی صُبح سے شمالی وزیرستان کے مختلف علاقوں پر جاسوس طیاروں کی پروازیں جاری تھیں اور حملے کے دوران فضا میں دو جاسوس طیارے موجود تھے اور اس وقت بھی شمالی وزیرستان کے مختلف علاقوں میں کئی ڈرون طیارے محو پرواز ہیں۔

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق رواں سال کے دوران شمالی و جنوبی وزیرستان میں ستر کےقریب ڈرون حملے ہو چکے ہیں جس میں دو سو سے زیادہ لوگ مارے گئے ہیں جن میں طالبان کے علاوہ زیادہ تر عام شہری بتائے جاتے ہیں۔

.

.

.

اسی بارے میں