جرمن باشندے سمیت تین گرفتار

پاکستان کے صوبہ خیبر پختون خوا کے جنوبی ضلع بنوں میں حکام کا کہنا ہے کہ شمالی وزیرستان سے آنے والے جرمن باشندے سمیت تین برقع پوش مشکوک افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

Image caption بنوں میں تعینات سکیورٹی فورسز

بنوں پولیس کے ایک اہلکار زاہد نے بی بی سی کو بتایا کہ پیر کی صبح قبائلی علاقے میر علی سے آنے والی ایک مسافرگاڑی کو دو سڑک چیک پوسٹ پر رکا گیا اور تلاشی لینے پر تین مشکوک برقع پوش افراد کو گرفتار کرلیا گیا جن میں جرمنی کا ایک باشندہ بھی شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پولیس نے مشکوک افراد کے ہمراہ ایک بچی کو بھی حراست میں لیا ہے۔

پولیس اہلکار نے مزید بتایا کہ مشکوک افراد کو گرفتاری کے بعد حساس اداروں نے اپنے تحویل میں لے کر انھیں کسی نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔

خیال رہے کہ ضلع بنوں قبائلی علاقے شمالی وزیرستان سے ملحق واقع ہے۔ اس علاقے میں اس سے پہلے بھی کئی بار غیر ملکیوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے جن میں یورپی اور عرب ممالک کے باشندے شامل تھے۔

قبائلی علاقہ قریب ہونے کی وجہ سے بنوں شہر اور آس پاس کے علاقوں میں اغواء برائے تاوان کی وارداتیں عام ہیں اور ان واقعات میں اکثر اوقات سرکاری ملازمین اور غیر سرکاری تنظیموں سے وابستہ افراد کو اغواء کیا جاتا رہا ہے۔

اسی بارے میں