آخری وقت اشاعت:  بدھ 23 جون 2010 ,‭ 04:44 GMT 09:44 PST

مزارعین کا مالکان حقوق کا مطالبہ

میڈیا پلئیر

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

ونڈوز میڈیا یا ریئل پلیئر میں دیکھیں/سنیں

انجمن مزارعین پنجاب نے زمینوں کی ملکیت کے لیے چلائی جانے والی تحریک کے دس برس پورے ہونے پر مطالبہ کیا ہے کہ ملٹری فارمز کی زمینیں ان کے نام لگا دی جائیں۔

انجمن مزارعین پنجاب کے عہدیداروں نے انتیس جون کو یوم سیاہ منائے جانے کا اعلان کیا ہے۔

انجمن مزارعین پنجاب کے عہدیداروں نے لاہور پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دس برس پہلے اوکاڑہ کے ملٹری فارم سے مالکی یا موت کے نعرے سے شروع ہونے والی اس تحریک نے بتدریج پورے پنجاب میں کے ملٹری اور ریسرچ فارمز کو اپنی لپیٹ میں لیا۔

انجمن مزارعین پنجاب کے جنرل سیکریٹری مہرعبدالستار نے کہا کہاس تحریک کے دس برس میں نوکسان رہنما ہلاک اور تین سو سے زائد مزارعے زخمی ہوئے۔متعدد کاشتکار رہنماؤں کو قتل کے مقدمات میں ملوث کرایا گیا اور دباؤ ڈالنے لیے مزارعوں کی بیٹیوں کو طلاق دلوانے جیسے ہتکھنڈے بھی استعمال کیے گئے۔

[an error occurred while processing this directive]

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔