’جیسے چاہیں استعمال کریں گے‘

پاکستانی فوج کو امریکہ سے ملنے والے تین جنگی طیارے پاکستانی فضائیہ کے بیڑے میں باقاعدہ شامل کیے گئے ہیں۔

ایف سولہ بلاک باون کے ان طیاروں کو پاکستانی حکام کے حوالے کرنے کی تقریب اتوار کے روز جیکب آباد میں شہباز ایئر بیس پر منعقد ہوئی۔ حکام کا کہنا ہے کہ ان طیاروں کی شمولیت سے پاکستانی فضائیہ کی طاقت میں زیادہ اضافہ ہوگا کیونکہ ان طیاروں میں رات کو ہدف بنانے کی صلاحیت بھی موجود ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستانی فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل راؤ قمر سلیمان نے کہا کہ یہ طیارے پاکستان کی ملکیت ہیں اور وہ جیسے چاہیں استعمال کرسکتے ہیں۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے امریکی فضائیہ کے سربراہ نے کہا ہے کہ وہ شدت پسندوں کے خلاف پاکستانی مہم کی حمایت کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہم پاکستانی سیکورٹی فورسز کی جانب سے شدت پسندوں کے خلاف روزانہ کی بنیاد پر جاری کارروائیوں اور ارادوں کی قدر کرتے ہیں۔اور یہ کارروائی وہ پاکستان اور پاکستانی طرز زندگی کو محفوظ بنانے کے لیے کر رہے ہیں۔

امریکی جنرل نے کہا یہ طیارے جنگ زدہ علاقے میں درست اہداف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

تقریب سے پاکستان میں امریکی سفیر این پیٹرسن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کا مقصد خطے کو پرامن بنانا ہے۔

پاکستان کے حوالے کیے گئے ایف سولہ طیاروں میں سرویلنس اور انٹیلجنس کے جدید نظام نصب ہیں۔

اسی بارے میں