کوہاٹ: ریموٹ کنٹرول دھماکے میں تین ہلاک

فائل فوٹو
Image caption کوہاٹ اور اس کے مضافاتی علاقے عرصہ دراز سے شدت پسندوں کی کارروائیوں کا نشانہ رہے ہیں

صوبہ خیبر پختونخواہ کے ضلع کوہاٹ کے نیم قبائلی علاقے جواکئی میں ایک مسافرگاڑی کے قریب دھماکے سے دو بچوں سمیت تین افراد ہلاک اور تین زخمی ہو گئے ہیں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ اتوار کو یہ دھماکہ سڑک کے کنارے نصب ریموٹ کنٹرول بم سے کیا گیا ہے۔

حکام کے مطابق اس دھماکے سے دو افراد موقع پر ہلاک جبکہ ایک زخمی ہسپتال میں دم توڑ گیا ۔ ایک زخمی کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔

کمشنر کوہاٹ محمد خالد عمر زئی کا کہنا ہے کہ جواکئی کا علاقہ ایف آر کوہاٹ میں شامل ہے جہاں مقامی لوگوں نے شدت پسندوں کے خلاف ایک لشکر بھی تشکیل دیا تھا۔

اس لشکر نے ایک اہم شدت پسند کو ہلاک جبکہ عسکریت پسندوں کے کچھ حملوں کو پسپا کر دیا تھا۔

پشاور سے ہمارے نامہ نگار عزیز اللہ خان کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکاروں کے مطابق ظاہری طور پر تو اس حملے کی وجوہات کا علم نہیں ہو سکا تاہم ایسی اطلاعات ہیں کہ یہ کارروائی شدت پسندوں کی ہو سکتی ہے جو مقامی قبائل کو نشانہ بنانا چاہتے ہیں۔

کوہاٹ اور اس کے مضافاتی علاقے عرصہ دراز سے شدت پسندوں کی کارروائیوں کا نشانہ رہے ہیں۔ یہ شہر ایک طرف درہ آدم خیل اور دوسری جانب اورکزئی ایجنسی کی سرحد پر واقع ہے۔

اسی بارے میں