کرم: مسافرگاڑیوں پر حملہ، اٹھارہ ہلاک

فائل فوٹو

پاکستان کے قبائلی علاقے لوئر کرم ایجنسی میں پولیس حکام کے مطابق مسافرگاڑیوں کے ایک قافلے پر نامعلوم افراد نے حملہ کیا ہے جس میں اٹھارہ افراد ہلاک اور دو زخمی ہوئے ہیں۔

مسافر گاڑیوں کا یہ قافلہ پارہ چنار سے پشاور جا رہا تھا کہ چارخیل میں ڈڈ قمر کے مقام پر نامعلوم افراد نے قافلے پر خود کار ہتھیاروں اور راکٹوں سے حملہ کیا ہے۔

پولیس کے مطابق سی ایم ایچ ٹل میں اٹھارہ لاشیں پڑی ہیں جبکہ دو افراد زخمی ہیں۔ اس حملے میں دو گاڑیاں مکمل طور پر تباہ ہو گئی ہیں۔

ٹل اور پارہ چنار کے درمیاں مسافر گاڑیوں کو سکیورٹی فورسز کی نگرانی میں گزارا جاتا ہے لیکن سیکیورٹی اہلکاروں نے کہا ہے کہ یہ قافلہ اپنے طور پر آ رہا تھا۔

ٹل میں سرکاری اہلکاروں نے بتایا ہے کہ علاقے میں کشیدگی کی وجہ سے مسافر گاڑیاں اپنے طور پر سفر نہیں کرتیں اور انھیں حساس مقامات سے سیکیورٹی فورسز قافلے کی صورت میں گزارتی ہیں۔

پشاور میں بی بی سی کے نامہ نگار عزیزاللہ خان نے بتایا کہ اس واقعہ کے بعد ٹل پارہ چنار روڈ بند کر دیا گیا ہے جبکہ پارہ چنار میں حفاظتی اقدامات کے طور پر سکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔

ایسی اطلاعات بھی ہیں کہ اِن علاقوں میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے لیکن سرکاری سطح پر اس کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

خیال رہے کہ تقریباً گزشتہ دو سال سے ٹل پارہ چنار شاہراہ بند ہونے کی وجہ سے پارہ چنار اور آس پاس علاقوں کے باشندے افغانستان کے راستے پشاور جاتے ہیں۔

اسی بارے میں