وسط مدتی انتخابات نہیں ہوں گے: گیلانی

سید یوسف رضا گیلانی
Image caption حکومت مستحکم ہے اور اپنی آئینی مدت پانچ سال مکمل کرے گی۔

پاکستان کے وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کا کہنا ہے کہ جلعی تعلیمی اسناد کی وجہ سے ملک میں کوئی وسط مدتی انتخابات نہیں ہونگے، حکومت مستحکم ہے اور اپنی آئینی مدت پانچ سال مکمل کرے گی۔

انہوں نے بات سنیچر کو پنجاب کے ضلع قصور میں ایک پاور پلانٹ کی افتتاح کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہی۔وزیر اعظم نے کہا کہ جہاں سے کوئی رکن اسمبلی جعلی تعلیمی سند کی وجہ سے نااہل ہونگے ان کے اس انتخابی حلقے میں ضمنی انتخابات کروائیں گے۔

یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ وسط مدتی انتخاب کی جو سوچ ہے اسے بھول جائیں کیونکہ بقول ان کے جعلی ڈگریوں کی وجہ سے وسط مدتی انتخابات ہونگے ۔

ہمارے نامہ نگار عبادالحق کا کہنا ہے کہ پاکستان کے وزیر اعظم سید یوسف رضاگیلانی نے کہا ہے کہ دہشت گرد جہاں کہیں بھی ہیں وہ دہشت گرد ہیں اور دہشت گردوں کے ساتھ کوئی مذاکرات نہیں ہو سکتے۔

وزیر اعظم کے بقول انسانوں کے ساتھ بات ہوتی ہے دہشت گرد اور درندوں سے بات نہیں ہو سکتی ۔

یوسف رضا گیلانی کا یہ بیان مسلم لیگ نون کے قائد نواز شریف کے اس بیان کے بعد سامنے آیا جب دو ہفتے قبل نواز شریف نے لاہور میں ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ حکومت پاکستان کو طالبان سے بات کرنی چاہیے۔

صوبہ پنجاب میں دہشت گردی کے واقعات پر سید یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ پورے ملک کو دہشت گردی کا سامنا ہے اور صوبہ پنجاب بھی پاکستان کا ایک صوبہ ہے اس لیے بقول ان کے دہشت گرد جہاں کہیں بھی ہوگا وہ دہشت گرد ہے اسی وجہ سے دہشت گردی کا مقابلہ کرنے کے لیے ایک یکساں پالیسی ہوگی۔

وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے ایک اور سوال پر کہا کہ ان کی چیف جسٹس پاکستان کے ساتھ بڑا اچھے تعلقات ہیں اور اس بارے میں چیف جسٹس سے پوچھ سکتے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی اڑھائی سالوں میں ملک میں کوئی سیاسی قیدی نہیں ہے اور وہ انتقامی سیاست نہیں کرنا چاہتے۔ ان کے بقول اگر کوئی ایسا معاملہ ہے تو اس پر کارروائی کی جائے گی۔

اسی بارے میں