ضمنی انتخاب میں آزاد امیدوار کامیاب

فائل فوٹو، الیکشن کمیشن آف پاکستان
Image caption سرگودھا کے ضمنی انتخابات کے بعد اب قومی اسمبلی کی تین نشستوں پر ضمنی چناؤ ہونا ہے

صوبہ پنجاب کے پنجاب کے شہر سرگودھا میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں غیر سرکاری نتائج کے مطابق ملک کی دو بڑی سیاسی جماعتوں یعنی مسلم لیگ نون اور پیپلز پارٹی کے مدمقابل آزاد امیدوار نے کامیابی حاصل کرلی ہے۔

پیر کو پنجاب اسمبلی کے حلقہ پی پی چونتیس میں ہونے والے ضمنی انتخابات کے لیے ووٹ ڈالے گئے۔

یہ نشست مسلم لیگ نون کے رکن اسمبلی چودھری رضوان گل کی جعلی تعلیمی سند کی وجہ سے ان کے نااہل ہونے پر خالی ہوئی تھی۔

لاہور سے نامہ نگار عباادالحق کا کہنا ہے کہ غیر سرکاری اور غیر حتمی نتائج کے مطابق آزاد امیدوار اعجاز احمد کاہلوں نے پندرہ ہزار آٹھ سے زائد ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔

مسلم لیگ نون کے امیدوار چودھری تبریز گل ووٹوں کے اعتبار سے دوسرے جب کہ پیپلز پارٹی کے امیدوار حاجی فیاض احمد اوٹھی تیسرے نمبر پر آئے ہیں۔

سرگودھا میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں مسلم لیگ نون اور پیپلز پارٹی کے علاوہ آزاد امیدواروں میں مقابلہ ہوا جبکہ تحریک انصاف نے آصف خان کو اپنا امیدوار نامزد کیا تھا تاہم ان کی جماعت نے ضمنی انتخابات کا بائیکاٹ کردیا ۔

یہ دوسرا موقع ہے پنجاب میں حکمران جماعت کو صوبائی نشست کے لیے ہونے والے ضمنی انتخاب میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے اس سے پہلے ملتان سے صوبائی اسمبلی کے حلقہ سے وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کے بھائی اجمد مجتبیْ گیلانی نے مسلم لیگ نون کی امیدوار نعمہ مشتاق کو شکست دی تھی ۔

انتخابی عمل کی نگرانی کرنے والی غیرسرکاری تنظیم فری اینڈ فیئر الیکشن نیٹ ورک (فیفن) کا اپنی اتبدائی رپورٹ میں کہنا ہے کہ ووٹنگ کے مرحلے کے دوران مشکوک ووٹنگ اور پولنگ سٹیشنز کے اندر بڑی تعداد میں پولیس اور سکیورٹی حکام دیکھے گئے جبکہ انتخاب میں ووٹر ٹرن آوٹ کم رہا ہے۔

فیفن کے مطابق ووٹنگ کے دوران ایک سٹیٹ منسٹر اور پنجاب اسمبلی کے اراکین حقلے میں گھومتے ہوئے نظر آئے۔ پولنگ سٹیشن نمبر ایک سو بارہ کی حدور میں ایک سابق رکن صوبائی اسمبلی سکیورٹی اہلکاروںکے روکے جانے کے باوجود داخل ہو گئے۔

تنظیم کے مطابق چودہ پولنگ سٹیشنز سے حاصل ہونے والے اعدا و شمار کے مطابق مرد ووٹروں کا ٹرن آؤٹ چھبیس سے اٹھائیس اعشاریہ آٹھ جب کہ خواتین ووٹر کا ٹرن آؤٹ بائیس اعشاریہ ایک فیصد رہا جو دو ہزار آٹھ کے عام انتخاب سے کم ہے۔

خیال رہے کہ سرگودھا کے ضمنی انتخابات کے بعد اب قومی اسمبلی کی تین نشستوں پر ضمنی چناؤ ہونا ہے۔ان تین نشستوں میں سے دو پر مسلم لیگ نون کے ارکان اسمبلی جاوید حسنین اور مدثر قیوم ناہرا کامیاب ہوئے تھے جب کہ ایک نشست پر پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلیعامر یار ورن منتخب ہوئے تھے تاہم وہ جعلی تعلیمی اسناد کی وجہ سے نااہل ہوگئے ہیں۔

لاہور ہائی کورٹ میں ابھی ارکان اسمبلی کی تعلیمی کے اسناد کے حوالے سے درخواستیں زیر سماعت ہیں

اسی بارے میں