امداد کی ترسیل: اتھارٹی کے قیام پر اتفاق

نواز شریف، یوسف گیلانی فائل فوٹو

پاکستان کی حکومت اور اپوزیش کی بڑی جماعت مسلم لیگ نواز نے اعلان کیا ہے کہ وہ متحد ہوکر پاکستان میں آنے والے سیلاب کی تباہ کاریوں سے نمٹیں گے۔

یہ بات دونوں رہنماؤں نے ایک پریس کانفرنس میں کہی۔ اس موقع پر متاثرین کے لیے امداد جمع کرنے اور متاثرین میں امداد کی تقسیم کے لیے ایک ادارہ بنانے کا اعلان کیا ہے جو ایسے افراد پر مشتمل ہوگی جن کے بارے میں قوم کو معلوم ہو کہ وہ ماضی میں کرپشن میں ملوث نہیں رہے۔

میاں نواز شریف نے کہا کہ انہوں نے یہ تجویز دی ہے کہ متاثرین کے لیے فنڈز اکٹھے کرنے اور اس کی شفاف طریقے سے تقسیم کے لیے ایک خود مختار ادارہ بنایا جائے۔

اُن کا کہنا ہے کہ یہ ادار سات سے نو اراکین پر مشتمل ہوگا اور اس کا ایک چیئرمین ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایسے افراد ہوں جن کے بارے میں بھروسہ ہو کہ یہ امانت دار لوگ ہیں اور متاثرین کے فنڈز کے بہتیرن ایمن ہوسکتے ہیں۔

نواز شریف نے کہا کہ اس کمیٹی کے قیام کے بعد تمام سیاسی قائدین اور سول سوسائٹی کے لوگ مل کر فنڈز اکٹھے کرنے کے لیے پورے ملک میں ایک بھر پور مہم شروع کریں گے۔

انہوں نے مذید کہا کہ ہم اتنی طاقت رکھتے ہیں کہ ہم اپنے پاؤں پر خود کھڑے ہوں سکیں اور ایسا کر کے ہم دنیا پر یہ ثابت کر دیں گے کہ ملک کی بہتری کے لیے ہم متحد ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں اپنے غیر ضروری اخراجات کم کر کے اس فنڈ میں اپنا اپنا حصہ ڈالیں گی ۔

اس موقع پر وزیرِ اعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ حکومت سیلاب سے ہونے والے نقصانات کا اندازہ لگا رہی ہے اور اس کے بعد معلوم ہو گا کہ ملک میں کتنا نقصان ہوا ہے۔ اور پھر متاثرین کی مدد کے لیے فنڈز اکھٹے کیے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ نقصان کا اندازہ ہونے کے بعد یہ طے کیا جائے گا کہ متاثرین کے لیے وفاقی اور صوبائی حکومتیں کتنی رقم فراہم کریں گی۔

یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ آج تاریخی موقع ہے کہ پاکستان کے یومِ آزادی کے موقع پر ہم ایک بار پھر اکھٹے ہو رہے ہیں۔

انہوں نے ملک کی سیاسی جماعتوں، سول سوسائٹی اور مخیر افراد سے اپیل کی کہ وہ مشکل کی اس گھڑی میں سیلاب زدگان کی بھرپور مدد کریں۔

اسی بارے میں