امریکی ائربیس کو بچانے کا الزام

jamali
Image caption ظفراللہ جمالی کا الزام ہے کہ سندھ نےجمالی بائی پاس روڈ توڑ کر پانی کا رخ بلوچستان کی طرف کر دیا

پاکستان کے سابق وزیر اعظم میر ظفراللہ خان جمالی نے الزام لگایا ہے کہ وفاقی وزیر کھیل اعجاز جکھرانی نے ڈالروں کی خاطر جیکب آباد میں امریکی ائر بیس کو بچانے کے لیے پانی کا رخ بلوچستان کی طرف کر دیا ہے۔

ظفراللہ خان جمالی کا کہنا ہے کہ اس سے نہ صرف ہزاروں افراد بے گھر ہو ئے بلکہ سینکڑوں ایکٹر اراضی پر کھڑی فصلیں بھی تباہ ہو گئی ہیں۔

نامہ نگار ایوب ترین سے ٹیلی فون پر بات کرتے ہوئے میر ظفراللہ جمالی نے کہا کہ سندھ والوں نے زبردستی جمالی بائی پاس روڈ توڑ کر پانی کا رخ بلوچستان کی طرف کر دیا ہے جس سے صوبے کے دو اضلاع جعفرآباد اور نصیرآباد میں ہر طرف پانی آ گیا ہے۔ جب کہ ڈیرہ اللہ یار اور اوستہ محمد شہر مکمل طور پر پانی میں ڈوب چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے ان دو اضلاع میں سالانہ لاکھوں ٹن گندم، چاول اور دیگر اجناس کی پیداوار ہوتی ہے جو سیلابی پانی سے مکمل طور پر تبا ہ ہوئے ہیں۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ سندھ والوں نے ہمیں تباہ کر کے رکھ دیا ہے۔ ’صرف جیکب آباد میں ایک امریکن ائر بیس کو بچانے کے خاطر انہوں نے پانی کا ریلا بلوچستان کی طرف دھکیل دیا ہے۔‘

میر ظفر اللہ جمالی نے کہا کہ ہزاروں افراد اس وقت نقل مکانی کر چکے ہیں۔ ’میرے اپنے گاؤں روجھان جمالی کی آبادی گیار ہ ہزار ہے۔ رات کو چھ فٹ تک پانی آنے کے بعد پچانوے فیصد لوگ گھر بار چھوڑ کر نقل مکانی کر گئے اور باقی لوگ آج محفوظ مقامات پر جا چکے ہیں۔‘

انہوں نے کہا کہ جیکب آباد انتظامیہ کے اس اقدام کے خلاف فوج کے سربراہ، کور کمانڈر کوئٹہ اور دیگر اعلی حکام سے احتجاج بھی کیا گیا ہے۔ ’سب نے میری بات سنی لیکن سمجھا کوئی نہیں۔‘