کشمیر بس حادثے میں چودہ ہلاک

بس حادثہ: فائل فوٹو
Image caption پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر میں سڑکوں اور گاڑیوں کی خراب حالت کی وجہ سے آئے دن حادثات ہوتے رہتے ہیں

پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں پولیس کا کہنا ہے کہ جمعہ کے روز ایک مسافر بس کے حادثے کے نتیجے میں کم از کم چودہ افراد ہلاک اور تین درجن کے قریب افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ یہ مسافر گاڑی کوٹلی قصبے سے لائن آف کنڑول کے قریب واقع ایک گاؤں گوئی جارہی تھی کہ ساردہ کے مقام پر موڑ کاٹتے ہوئے حادثے کا شکار ہوکر گہری کھائی میں جاگری۔

ان کا کہنا ہے کہ نو افراد موقع پر ہی ہلاک ہوگئے تھے جبکہ پانچ لوگ ہسپتال لاتے ہوئے زخموں کی تاب نہ لاتے ہو جاں بحق ہوگئے۔ ہلاک ہونے والوں میں مرد، خواتین اور بچے سبھی شامل ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس واقع میں تیس سے زیادہ لوگ زخمی بھی ہوئے ہیں جنہیں مقامی ہسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے کیوں کہ بعض زخمیوں کی حالت خراب ہے۔

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ لوگ عید کی خریداری کرنے شہر آئے تھے اور واپس گھر جا رہے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ’ابتدائی تحقیقات کے مطابق یہ حادثہ ڈرائیور کی غفلت کی وجہ سے پیش آیا کیوں کہ بس کی رفتار تیز تھی اور بس میں گنجائش سے زیادہ مسافر تھے‘۔

اسلام آباد میں بی بی سی اردو کے نامہ نگار ذوالفقار علی کا کہنا ہے کہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں سڑکوں اور گاڑیوں کی خراب حالت اور تیز رفتاری کے باعث ٹریفک حادثات آئےے روز ہوتے رہتے ہیں۔

اسی بارے میں