بہاولپور:مسجد پر فائرنگ، دو ہلاک

جنوبی پنجاب میں مسجد کے طالب علم(فائل فوٹو)

جنوبی پنجاب کے شہر بہاولپور میں نامعلوم افراد کی جانب سے ایک مسجد پر فائرنگ کے نتیجے میں دو افراد ہلاک اور سات زخمی ہوگئے ہیں جبکہ ایک زخمی کی حالت تشویش ناک بتائی جارہی ہے۔

یہ واقعہ سنیچر کی صبح اُس وقت پیش آیا جب شہر کے رہائشی علاقے میں واقع مسجد میں فجر کی نماز کے بعد وہاں درس دیا جارہا تھا۔

پولیس کے مطابق موٹر سائیکل پرسوارتین نامعلوم حملہ آوروں نے سیٹلائیٹ ٹاؤن کے علاقے میں واقع مسجد القمر پر اُس وقت اندھا دھند فائرنگ شروع کردی جب مسجد کے صحن میں درس دیا جارہا تھا۔ فائرنگ کے نتیجے میں ایک درجن کے قریب افراد زخمی ہوگئے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ زخمیوں کو فوری طور پر مقامی ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں دو افراد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئےدم توڑے گئے جبکہ ایک زخمی کی حالت تشویش ناک ہے۔

بہاولپور کے ضلعی پولیس آفیسر بابر بخت نے بی بی سی کے نامہ نگار عبادالحق کو بتایا کہ جب مسجد پر فائرنگ کی گئی تو اُس وقت فجر کی نماز کے بعد نمازیوں کی اکثریت وہاں سے جاچکی تھی اور صرف بارہ سے تیرہ افراد وہاں پر درس سن رہے تھے۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کے مطابق چار بج کر پینتیس منٹ پر ایک موٹر سائیکل پر تین حملہ آور آئے اور ان میں سے ایک نے مسجد پر فائرنگ کی۔

بابر بخت کا کہنا ہے کہ پولیس اس واقعہ کی تفتیش کررہی ہے،اس واقعہ پر دہشت گردی کے پہلو کو بھی نظر انداز نہیں کیا جاسکتا اور اس پر بھی غور کیا جائے گا۔

ڈی پی او بہاولپور نے بتایا کہ مسجد پر فائرنگ کے واقعہ میں چھوٹی نوعیت کا اسلحہ یعنی پسٹل کا استعمال کیا گیا جبکہ اُن کے بقول دہشت گردی کے واقعات میں بڑا اسحلہ استعمال ہوتا ہے۔

پولیس آفیسر بابر بخت کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے واقعہ سے قبل مسجد کو کسی قسم کی کوئی دھمکی موصول نہیں ہوئی تھی۔

پولیس کے مطابق تین نامعلوم افراد کےخلاف مسجد پر فائرنگ کے واقعہ کا مقدمہ خلاف درج کرلیا گیا ہے اور مقدمہ میں قتل، اقدامِ قتل کی دفعات کے علاوہ انسدادِ دہشت گردی ایکٹ کی دفعہ سات کو بھی شامل کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں