’میرے پیسے چوری ہو گئے ہیں‘

محمد علی شاہ
Image caption اس سے قبل بھی ڈاکٹر شاہ قومی پرچم اٹھانے کے تنازعے کی وجہ سے شہ سرخیوں میں آ چکے ہیں

دولت مشترکہ کھیلوں میں پاکستانی دستے کے شیف ڈی مشن نے گیمز کی آرگنائزنگ کمیٹی سے شکایت کی ہے کہ ان کے کمرے سے تقریباً پچیس ہزار روپے چوری ہوگئے ہیں لیکن دلی پولیس کے مطابق اسے ابھی کوئی باقاعدہ شکایت موصول نہیں ہوئی ہے۔

شیف ڈی مشن محمد علی شاہ کا کہنا ہے کہ نامعلوم افراد نے کھیل گاؤں میں ان کے کمرے میں داخل ہوکر چوبیس ہزار آٹھ سو روپے چرا لیے اور انہوں نے اس بارے میں آرگنائزنگ کمیٹی سے شکایت کی ہے۔

محمد علی شاہ سے براہ راست رابطہ نہیں ہوسکا لیکن انہوں نے خبر رساں ادارے پی ٹی آئی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کھیل گاؤں میں انتہائی سخت سکیورٹی ہونے کے باوجود یہ واقعہ پیش آنے پر وہ حیرت زدہ ہیں۔

شاہ کے مطابق منتظمین نےان چار ملازمین سے پوچھ گچھ کی ہے جن کے پاس ان کے کمرے کی ماسٹر چابی رہتی ہے۔

لیکن دلی پولیس کے ترجمان راجن بگھت کا کہنا ہے کہ پولیس کو اس بارے میں کوئی رپورٹ نہیں ملی ہے۔ پی ٹی آئی نے پولیس ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ پاکستانی وفد کے ارکان ابھی وثوق کے ساتھ یہ کہنے کی پوزیشن میں نہیں ہیں کہ پیسےواقعی چوری ہوئے ہیں یا ڈاکٹر شاہ کہیں رکھ کر بھول گئے ہیں۔

اس سے پہلے ڈاکٹر شاہ گیمز کی افتتاحی تقریب میں خود قومی پرچم اٹھانے کی وجہ سے بھی تنازعہ کا شکار ہوگئے تھے حالانکہ یہ ذمہ داری ویٹ لفٹر شجاع الدین ملک کو سونپی گئی تھی۔

اس کے بعد پاکستان کے وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے ایک انکوائری کا حکم دیا تھا۔

اسی ہفتے گیمز ولیج میں ویلز کی ایک خاتون ایتٹھلیٹ نے پولیس سے ایک شخص کے بارے میں شکایت کی تھی جو زبردستی ان کی تصویر کھینچ رہا تھا۔ اور ان کا پیچھا کرتا ہوا ان کے کمرے کے دروازے تک پہنچ گیا تھا۔ اس معاملے کی بھی تفتیش جاری ہے لیکن ابھی اس شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

اسی بارے میں