پھر ڈرون حملہ، آٹھ ہلاک

Image caption تحصیل دتہ خیل کے پہاڑی سلسلے افغان سرحد سے ملی ہوئے ہیں جہاں روس کے خلاف افغان جہادیوں کی مختلف تنظیموں کی بنی ہوئی پناہ گاہیں اب بھی موجود ہیں

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں دو ڈرون طیاروں کے حملوں میں کم از کم آٹھ افراد ہلاک جبکہ پانچ زخمی ہو گئے ہیں۔ زخمیوں کو طالبان نے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے۔

شمالی وزیرِ ستان میں ایک سرکاری اہکار نے بی بی سی کو بتایا کہ دونوں واقعات بدھ کی شام نو بجے کے قریب میرانشاہ سے تیس کلو میٹر دور مغرب کی جانب افغان سرحد کے قریب تحصیل دتہ خیل کے پہاڑی علاقے اینزر کچ میں پیش آئے۔

پاکستان:امریکی ڈرون حملوں میں تین گناہ اضافہ: خصوصی ضمیمہ

ڈرون حملوں کا تعلق یورپ منصوبے سے

ڈرون حملوں میں تیزی کیوں؟ آڈیو رپورٹ

انہوں نے کہا کہ دو مبینہ امریکی جاسوس طیاروں سے پہلے ایک مکان پر تین میزائل داغے گئے جس کے نتیجہ میں پانچ افراد ہلاک جبکہ دو زخمی ہوگئے۔جبکہ چند منٹ بعد مکان کے قریب ایک نان کسٹم گاڑی کو نشانہ بنایا جس کے نتیجہ میں تین افراد ہلاک اور دو زخمی ہوگئے۔انہوں نے بتایا کہ گاڑی پر چار میزائل داغے گئے۔ جس سے گاڑی بھی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔

اہلکار کے مطابق لاشوں اور زخمیوں کو مقامی طالبان نے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہلاک ہونے والوں میں پانچ غیر مُلکی جنگجوں شامل ہیں جن کا تعلق ترکمانستان سے بتایا جاتا ہے۔

انہوں نے مذید بتایا کہ ہلاک ہونے والوں میں چار کا تعلق حافظ گل بہادر گروپ کے مقامی طالبان سے بتایا جاتا ہے۔لیکن اب یہ معلوم نہیں کہ کیا ہلاک ہونے والوں میں کوئی اہم شخص شامل ہے یا نہیں۔

تحصیل دتہ خیل کے پہاڑی سلسلے افغان سرحد سے ملی ہوئے ہیں جہاں روس کے خلاف افغان جہادیوں کی مختلف تنظیموں کی بنی ہوئی پناہ گاہیں اب بھی موجود ہیں۔

خیال رہے کہ شمالی وزیرستان میں پچھلے چند مہینوں سے مبینہ امریکی جاسوس طیاروں کے حملوں میں اضافہ ہوا ہے ان حملوں میں زیادہ تر حافظ گل بہادر گروپ کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے جن میں بیت اللہ گروپ کے بھی کئی جنگجوؤں مارے گئے ہیں۔

مقامی طالبان کے علاوہ غیر مُلکی جنگجوں اور پنجابی طالبان بھی نشانہ بنے ہیں۔

مبصرین کے خیال میں جنوبی و شمالی وزیرستان دو ایسے قبائلی علاقے ہیں جہاں غیرمُلکی جنگجوں اور مقامی طالبان کے محفوظ ٹھکانے موجود ہیں۔اس لیے سب سے زیادہ ڈرون حملوں کا نشانہ بھی یہی دو قبائلی علاقے ہیں۔

اسی بارے میں