پنجاب: چار اضلاع میں عدالتوں میں اضافہ

دہشت گردی کے ملزمان(فائل فوٹو)

پنجاب حکومت نے صوبے میں دہشت گردی کے زیر سماعت مقدمات کو تیزی سے نمٹانے کے لیے چار اضلاع میں انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالتوں کی تعداد کو بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

خصوصی عدالتوں کے لیے چیف پبلک پراسیکیوٹر چودھری جہانگیر احمد کا کہنا ہے کہ اس فیصلے کے مطابق صوبے کے ان اضلاع سے عدالتوں کو دوسرے اضلاع میں منتقل کیا جائے گا جہاں پر زیر التواء مقدمات کی تعداد کم ہوگئی ہے۔

انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کی دوسرے اضلاع میں منتقلی کے فیصلے پر عمل درآمد نومبر سے شروع ہوگا۔

پنجاب میں اس وقت انسداد دہشت گردی کی چودہ عدالتیں کام کر رہی ہیں۔

میاں نواز شریف نے انیس سو ستانونے میں ملک بھر میں انسداد دہشت گردی ایکٹ متعارف کروایا تھا اور اسی قانون کے تحت نئی عدالتیں قائم کی گئیں جن میں صرف دہشت گردی کے مقدمات کی سماعت کی جاتی ہے۔

لاہور میں ہمارے نامہ نگار عباد الحق سے بات کرتے ہوئے چیف پبلک پراسیکیوٹر چودھری جہانگیر احمد نے کہا کہ راولپنڈی، فیصل آباد، بہاولپور اور ڈیرہ غازی خان میں انسداد دہشت گردی کی عدالتوں کی تعداد میں اضافہ کیا جارہا ہے اور ان چار اضلاع میں ایک ایک نئی عدالت مقدمات کو نمٹانے کے لیے کام شروع کردے گی۔

چودھری جہانگیر احمد کے بقول لاہور میں اس وقت انسداد دہشت گردی کی چار عدالتیں کام کر رہی ہیں جبکہ مقدمات کی تعداد کم ہوکر صرف چالیس رہ گئی ہے۔ ’اس لیے یہ فیصلہ کیا گیا کہ لاہور کی انسداد دہشت گردی کی چار میں سے دو عدالتیں دوسرے اضلاع میں منتقل کر دی جائیں۔‘

انہوں نے بتایا کہ لاہور کی دو عدالتوں میں سے ایک عدالت کو بہاولپور اور دوسری کو فیصل آباد منتقل کیا جائے گا جہاں اب عدالتوں کی تعداد بڑھ کر دو دو ہوجائے گی۔

ان کا کہنا ہے کہ بہاولپور میں انسداد دہشت گردی کی عدالت میں ستر جبکہ فیصل آباد کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں اسی کے قریب مقدمات زیر سماعت ہیں اور وہاں مزید عدالتیں قائم ہونے سے زیر سماعت مقدمات کو تیزی سے نمٹانے میں مدد ملے گی۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ گوجرانوالہ میں انسداد دہشت گردی کی دو عدالتیں ہیں وہاں مقدمات کی تعداد کم ہونے کی وجہ سے ایک عدالت کو راولپنڈی منتقل کیا جارہا ہے۔ ان کے بقول راولپنڈی میں انسداد دہشت گردی کی دو عدالتیں کام کررہی ہیں تاہم مقدمات کا بوجھ زیادہ ہونے کی وجہ سے وہاں پر ایک اور عدالت قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

چودھری جہانگیر احمد نے بتایا کہ ملتان میں انسداد دہشت گردی کی دو عدالتوں میں سے ایک عدالت کو ڈیرہ غازی خان منتقل کیا جارہا ہے جس سے وہاں انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالتوں کی تعداد دو ہوجائے گی اور اس طرح وہاں پر زیر التوا مقدمات کو مناسب وقت میں نمٹایا جاسکے گا۔

پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں چار، ملتان، گوجرانوالہ اور راولپنڈی میں دو دو جبکہ سرگودھا، بہاولپور اور ڈیرہ غازی خان ایک، ایک انسداد دہشت گردی کی عدالتیں کام کر رہی ہیں۔

اسی بارے میں