بلوچستان: چار ہلاک، دو زخمی

Image caption ہلا ک ہونے والوں کا تعلق پنجاب کے شہر لاہور اور فیصل آباد سے بتایا جاتا ہے

ایران کے قریب پاکستان کے سرحدی شہرمند بلو میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے چار افراد ہلاک اور دوزخمی ہوئے ہیں۔ مند انتظامیہ نے ہلاک ہونے والوں کا تعلق پنجاب سے بتایا ہے جو غیر قانونی طور پر ایران گئے تھے۔

کوئٹہ سے بی بی سی کے نامہ نگار ایوب ترین کے مطابق اتوار کے شام کوایران سے ملعقہ بلوچستان کے سرحدی شہر مند بلو میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے چار افراد کو ہلاک اور دو شدید زخمی کیا ہے ۔ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو فوری طورپر سول ہسپتال کیچ منتقل کیا گیا ہے۔

تحصیلدار مند محمد رفیق نے بی بی سی کو واقعہ کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ہلا ک ہونے والوں کا تعلق پنجاب کے شہر لاہور اور فیصل آباد سے تھا جو کچھ عرصہ قبل مند کے راستے غیر قانونی طور پر ایران گئے تھےاورآج یہ لوگ واپس آکر مند بس آڈہ پر کراچی جانے لیے کسی گاڑی کا انتظارکر رہے تھے کہ ایک موٹر سائیکل پر دو نامعلوم افراد نے آکر ان پر فائرنگ کی اور بعد میں فرارہوئے۔

محمد رفیق کے مطابق واقعہ کے بعد ملزمان کی تلاش کے لیے علاقے کی ناکہ بند کردی گئی ہے لیکن ابھی تک کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے اور نہ ہی کسی گروپ نے اس واقعہ کی ذمہ داری قبول کی ہے۔انہوں نے بتایا کہ پوسٹ مارٹم کے بعدہلاک ہونے والوں کی لاشوں کو ورثاء کے حوالے کیا جائے گا جبکہ زخمی ہونے والوں پر ایران میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے کا مقدمہ قائم کرکے ان کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے گی۔

خیال رہے کہ بلوچستان کے سرحدی شہروں منداور تفتان کے راستے ہر سال ہزاروں کی تعداد میں پاکستان سے غیر قانونی طور پر یور پ اور خلیجی ممالک جانے والے ایران میں داخل ہوتے ہیں۔

اگرچہ حکومت پاکستان نے ہمشہ اس علاقے میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے جانے کا دعوی کیا ہے لیکن اس کے باوجود بلوچستان کے راستے پنجاب سے یورپی اور خلیجی ممالک کو انسانوں کی اسمگلنگ کا سلسلہ جاری ہے۔

کوئٹہ میں ایف آئی حکام کا کہنا ہے کہ گزشتہ چند سالوں میں انسانی اسمگلنگ میں نمایاں کمی آئی ہے۔ تاہم بقول انکے کہ انسانی اسمگلنگ میں پاکستان کے کئی بااثر شخصیات ملوث ہیں جس کے باعث انسانی اسمگلنگ کے ایجنٹ گرفتارہونے کے باوجود ثبوت اور گواہ نہ ہونےکی بنیاد پر عدالتوں سے رہا ہوجاتے ہیں۔

اسی بارے میں