’کوئٹہ میں فوج رکھنے کی اجازت نہیں‘

Image caption کوئٹہ میں امریکی فوج کی کوئی مستقل موجودگی نہیں:امریکہ

امریکی حکام نے ان اطلاعات کو تحریف پر مبنی قرار دیتے ہوئے رد کر دیا ہے کہ پاکستان نے کوئٹہ میں امریکی فوجیوں کی تعیناتی کی اجازت دے دی ہے۔

اسلام آباد میں امریکی سفارتخانے کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ذرائع ابلاغ میں آنے والی یہ خبریں کہ امریکی افواج کو کوئٹہ میں پاکستانی فوج کی بارہویں کور کے ہیڈکوارٹر میں ’اپنی موجودگی‘ رکھنے کی اجازت دی گئی ہے، تحریف پر مبنی ہیں۔

بیان کے مطابق کوئٹہ میں امریکی فوج کی کوئی مستقل موجودگی نہیں ہے تاہم جب ایساف افواج پاکستانی سرحد سے نزدیک افغان علاقے میں کارروائی کرتی ہیں تو اس وقت امریکی حکام ایساف اور پاکستانی فوج کے حکام کے درمیان رابطے کے لیے کوئٹہ میں موجود ہوتے ہیں۔

بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اس قسم کے دوروں کا مقصد معلومات اور باہمی رابطے میں معاونت کا فریضہ سرانجام دینا ہوتا ہے۔

خیال رہے کہ پاکستانی ذرائع ابلاغ میں پچیس نومبر کو یہ خبر شائع ہوئی تھی کہ امریکی وزارتِ دفاع نے کانگریس کو بتایا ہے کہ پاکستانی حکام نے امریکہ اور اس کے اتحادیوں کو کوئٹہ کے بریگیڈ ہیڈکوارٹر میں ایک دفتر فراہم کر دیا ہے۔

حال ہی میں پاکستان نے امریکہ کی جانب سے ڈرون حملوں کا دائرہ کوئٹہ تک پھیلانے کی امریکی درخواست بھی رد کر دی تھی اور دفترِ خارجہ کے ترجمان نے اس بارے میں بی بی سی اردو کو بتایا تھا کہ ’پاکستان کی پوزیشن بالکل واضح ہے اور وہ یہ کہ ہم کبھی بھی اس کی اجازت نہیں دیں گے‘۔

اسی بارے میں