’خلاف ورزی ہم نے نہیں آپ نے کی‘

Image caption پاکستان نے ہندوستان کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے اس پر پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا ہے۔

پاکستان نے ہندوستان کے اس الزام کو مسترد کیا ہے کہ اس کے طیاروں نے ہندوستان کی فضائی حدود کی کوئی خلاف ورزی کی ہے۔

پاکستان نے جواب میں ہندوستان پر الزام عائد کیا کہ اس کی فضائیہ کے طیاروں نے پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی ہے۔

پاکستان کی وزرات خارجہ کے ترجمان نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہندوستان کی فضائیہ کے طیاروں نے رواں سال اب تک بیس مرتبہ پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی ہے۔ جب کہ نومبر سن دو ہزار سات سے نومبر دو ہزار دس تک ہندوستانی طیاروں نے ایک سو اسی مرتبہ پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی۔

اس سے پہلے ہندوستان کے وزیر دفاع اے کے انٹونی نے جمعہ کو لوک سبھا میں بیان دیتے ہوئے کہا تھا کہ دسمبر دو ہزار سات سے نومبر دو ہزار دس تک تین برسوں کے دوران غیر ملکی طیاروں کی جانب سے انتیس مرتبہ ہندوستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی گئی۔

اے کے انٹونی نے تفصیل بتاتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان کی فضائیہ کے طیاروں نے تئیس مرتبہ، بنگلہ دیش کے طیاروں نے ایک مرتبہ جب کہ چین کے طیاروں نے دو مرتبہ اور امریکی طیاروں نے تین مرتبہ ہندوستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی۔

انھوں نے یہ بھی کہا تھا کہ ملک کی فضائی سرحدوں کی حفاظت کے لئے مقررہ میعاری طریقہ کار رائج ہیں جس میں بھارت کے فضائیہ کے لڑاکا طیاروں کی تعیناتی بھی شامل ہے۔

ہندوستان کے وزیر دفاع نے کہا تھا کہ سفارتی چینل کے ذریعے یہ معاملہ متعلقہ ممالک کے سامنے اٹھایا گیا ہے۔

پاکستان کی وزرات خارجہ نے ہندوستان کے وزیر دفاع کے بیان کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہندوستان کے طیاروں کی طرف سے پاکستان کی فٰضائی حدود کی مبینہ خلاف ورزی کے معاملے کو سفارتی چینل کے ذریعے تواتر کے ساتھ بھارت کی حکومت کے نوٹس میں لایا گیا ہے۔

ترجمان نے اپنے بیان میں پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی بڑھتی ہوئی شرح پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

سات سال قبل ہندوستان اور پاکستان کے درمیان اعتماد سازی کے اقدامات شروع ہونے کے بعد پاکستان نے پہلی مرتبہ فروری سن دو ہزار چھ میں الزام لگایا تھا کہ بھارتی طیارے نے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی۔

پاکستانی وزارتِ خارجہ نے اس وقت کہا تھا بھارتی بحریہ کا ایک طیارہ ایک پاکستانی بحری جہاز کے اوپر سے کئی بار نیچی پرواز کرتے ہوئے گزرا اور اس کا انداز اشتعال انگیز تھا۔

انڈیا نے اس وقت یہ الزام عائد کیا تھا کہ پاکستان کی شِپنگ ایجنسی کی فائرنگ کے باعث ایک مچھیرا ہلاک ہوا۔

نومبر سن دو ہزار آٹھ میں ہونے والے ممبئی حملوں کے چند ہفتوں بعد پاکستان نے اسی سال میں یہ الزام بھی عائد کیا تھا کہ بھارت کی فضائیہ کے لڑاکا طیاروں نے دو الگ الگ مقامات سے پاکستان کے فضائی حدود کی خلاف ورزی کی۔ لیکن ہندوستان نے اس الزام کی تردید کی تھی۔

اسی بارے میں