دو وزیرِ فارغ، تین کے محکمے تبدیل

حامد سعید کاظمی
Image caption مسٹر کاظمی اور سواتی کو ہٹائے جانے کی کوئی وجہ تاحال نہیں بتائی گئی ہے لیکن بظاہر اس کی وجہ دونوں وزراء کی جانب سے ایک دوسرے کے خلاف کرپشن کے الزامات لگانے اور معاملہ عدالت میں لے جانا ہی نظر آتی ہے۔

وزیرِاعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کابینہ کے دو وفاقی وزراء کو ان کے عہدوں سے ہٹا دیا ہے جبکہ تین وفاقی وزراء کے محکمے تبدیل کردیے ہیں۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق مذہبی امور کے وفاقی وزیر حامد سعید کاظمی اور سائنس و ٹیکنالوجی کے وفاقی وزیر اعظم خان سواتی کو فارغ کردیا گیا ہے۔ بیان کے مطابق دونوں وزیروں سے محکمے واپس لیے گئے ہیں اور تاحال یہ واضح نہیں کہ وہ وفاقی وزیر رہیں گے یا نہیں۔

وزیراعظم ن سید خورشید احمد شاہ کو مذہبی امور، سردار آصف احمد علی کو انفارمیشن ٹیکنالوجی اور مخدوم شہاب الدین کو دفاعی پیداوار کا وزیر مقرر کردیا ہے۔

بیان کے مطابق سید خورشید احمد شاہ کے پاس محنت و افرادی قوت، سردار آصف احمد علی کے پاس تعلیم اور مخدوم شہاب الدین کے پاس صحت کی وزارتوں کا اضافی چارج رہے گا۔

اسلام آباد میں بی بی سی کے نامہ نگار اعجاز مہر کا کہنا ہے کہ بظاہر ایسا لگتا ہے کہ وزیراعظم نے ایک تیر سے دو شکار کیے ہیں۔

ایک طرف ‘حج کرپشن‘ کے حوالے سے جہاں وزیراعظم کی ہدایات پر ایک دوسرے کے خلاف بیان بازی بند نہ کرنے پر حامد سعید کاظمی اور اعظم خان سواتی کو فارغ کردیا ہے تو دوسری طرف اٹھارویں آئینی ترمیم کے تحت جو وزارتیں صوبوں کو منتقل ہونی ہیں ان کا قلم دان جن وفاقی وزراء نے سنبھال رکھا ہے ان کے محکمے تبدیل کیے گئے ہیں جس سے ان وزراء کا مستقل بھی محفوظ ہو گیا ہے۔

اٹھارویں ترمیم کے تحت صحت، تعلیم اور محنت و افرادی قوت کے محکمے صوبوں کو منتقل ہونے ہیں۔

مسٹر کاظمی اور سواتی کو ہٹائے جانے کی کوئی وجہ تاحال نہیں بتائی گئی ہے لیکن بظاہر اس کی وجہ دونوں وزراء کی جانب سے ایک دوسرے کے خلاف کرپشن کے الزامات لگانے اور معاملہ عدالت میں لے جانا ہی نظر آتی ہے۔

بیان کے مطابق وزارتِ مذہبی امور کے سیکریٹری آغا سروس رضا کو اپنے عہدے سے ہٹادیا ہے اور انہیں ایسٹیبلشمینٹ ڈویژن میں رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ جبکہ وزارت مذہبی امور کا نیا سیکریٹری سعید خان کو تعینات کیا گیا ہے۔ سعید خان اس وقت سمندر پار پاکستانیوں کے ڈویژن کے سیکریٹری ہیں۔

اسی بارے میں