شیر شاہ فائرنگ کیس، نو ملزمان گرفتار

فائل فوٹو
Image caption شیر شاہ میں ہلاکتوں کے بعد ہنگامہ آرائی میں مزید افراد ہلاک ہو گئے تھے

صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں پولیس نے شیر شاہ مارکیٹ میں حملہ کر کے تیرہ دکانداروں کو قتل کرنے کے مقدمے میں نو ملزمان کو گرفتار کیا ہے۔

گزشتہ سال انیس اکتوبر کو شیر شاہ کباڑی مارکیٹ میں حملے کے بعد شہر میں ہنگامہ آرائی شروع ہوگئی تھی اور تشدد کے واقعات میں مزید چودہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

کراچی پولیس کے سپیشل انویسٹی گیشن یونٹ کے سربراہ ایس پی راجہ عمر خطاب کا کہنا ہے کہ اعجاز، اقبال، محمد اکبر، محمد طفیل، اصغر علی، عبدالرشید، تحسین، جوہر اور عابد نے خود گرفتاری پیش کی ہے۔

اطلاعات کے مطابق ملزم میووہ شاہ قبرستان میں گورکن ہیں، پولیس کو شبہ ہے کہ ان کا واقعے میں کوئی کردار ضرور ہے جس کا تعین ہونا ہے۔

نامہ نگار ریاض سہیل کا کہنا ہے کہ شیر شاہ مارکیٹ کے تاجروں پر حملے کا مقدمہ تیرہ ملزمان کے خلاف دائر کیا گیا تھا، اس سے قبل پولیس چار ملزمان لال محمد مگسی، محمد شفیع، اسلم پرویز اور نواز علی کو گرفتار کر چکی ہے تاہم ان میں سے کسی سے بھی کوئی اسلحہ برآمد نہیں ہوا ہے۔

ایم کیو ایم اور دیگر سیاسی جماعتوں کا حکومت سے بار بار یہ مطالبہ رہا ہے کہ شیر شاہ واقعے میں ملوث ملزمان کو گرفتار کیا جائے۔

اسی بارے میں