ولی خان بابرکی ہلاکت پر سوگ کا اعلان

عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر شاہی سید نے ولی خان بابر کے قتل پر تین روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ ٹارگٹ کلنگز میں ملوث ملزمان کے خلاف سیاسی وابستگی سے بالاتر ہوکر کارروائی کی جائے۔

انھوں نے کہا: ’جب تک بھتا مافیا ختم نہیں ہوگا اس وقت تک شہر کے کسی حصے میں امن ممکن نہیں۔ ہم سپریم کورٹ کے چیف جسٹس سے اپیل کرتے ہیں ٹارگٹ کلنگز میں سیاسی مخالفین غریب اور معصوم لوگوں کے ساتھ ساتھ بے داغ صحافیوں کی ہلاکت کا از خود نوٹس لیکر کراچی میں امن کے لیے کردار ادا کرے‘

دوسری جانب متحدہ قومی موومنٹ کے ڈپٹی پارلیمانی رہنما فیصل سبز واری کا کہنا ہے کہ ولی خان بابر کا قتل شہر میں امن خراب کرنے اور لسانی فسادات کرانے کی سازش ہے۔

لیاقت آباد میں صحافی ولی خان بابر کے قتل کی واردات کا رونما ہونا اور اس کے فوری بعد اورنگی ٹاؤن کٹی پہاڑی اور شہر کے دیگر علاقوں میں بے گناہ اردو بولنے والوں کا قتل کراچی میں لسانی فساد کرانے کی سازش ہے، تاکہ ولی خان بابر کے قتل کو لسانی رنگ دیگر اس کی تحقیاقت کا رخ موڑا جاسکے۔‘

دریں اثنا سورج غروب ہونے کے بعد دوبارہ اورنگی اور قصبہ موڑ پر فائرنگ کی گئی ہے، جس میں ایک شخص برکت علی ولد شہزاد زادہ ہلاک اور چار افراد زخمی ہوگئے ہیں، جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد تیرہ ہوگئی ہے۔

اسی بارے میں