پشاور: امن کمیٹی کے سربراہ کا بھائی قتل

فائل فوٹو
Image caption ہمند ایجنسی میں شدت پسند اب تک سو سے زیادہ امن کمیٹی کے رضاکاروں کو ہلاک کر چکے ہیں: مقامی انتظامیہ

صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں حکام کے مطابق مہمند ایجنسی میں امن کمیٹی کے سربراہ کے بھائی کو نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب کو پشاور کے علاقے فقیر آباد میں رنگ روڈ کے قریب مہمند ایجنسی کی تحصیل صافی معسود میں امن کمیٹی کے سربراہ ملک صوبیدار کے بھائی سید الرحمان کو نامعلوم مُسلح افراد نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا ہے۔

پولیس اہلکار کے مطابق نامعلوم مُسلح افراد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

مہمند میں طالبان کی طاقت اور پس منظر

اس واقعہ کی ذمہ دار تحریک طالبان پاکستان مہمند ایجنسی کے ترجمان سجاد مہمند نے بی بی سی کو ٹیلی فون کر کے قبول کی ہے۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق مہمند ایجنسی میں شدت پسند اب تک امن کمیٹی کے ایک سو سے زائد رضاکاروں کو ہلاک کر چکے ہیں۔

دریں اثنا پاکستان کے قبائلی علاقے باجوڑ ایجنسی میں سکیورٹی فوسرز نے طالبان کے گڑھ سمجھے جانے والے علاقے ماموند میں کارروائی کی ہے۔

Image caption تحصیل ماموند پر اس وقت فوج کا کنڑول ہے

اس کارروائی میں ایک طالبان کمانڈر کے مکان کو نذر آتش اور دو کو گرفتار کیا گیا ہے۔

مقامی پولیٹکل انتظامیہ کا کہنا ہے کہ صدر مقام خار سے تقریباً پندرہ کلومیٹر دور مغرب کی جانب تحصیل ماموند کے علاقے لغڑی میں سکیورٹی فورسز نے شدت پسندوں کے خلاف کارروائی کی جس میں ایک سو سے زیادہ اہلکاروں نے حصہ لیا۔

انہوں نے بتایا کہ سکیورٹی فورسز نے تحریک طالبان پاکستان کے ایک کمانڈر کے مکان کو آگ لگا کر نذر آتش کردیا جب کہ شیرولی اور ادریس کو گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کارروائی کے دوران کسی قسم کی مزاحمت نہیں ہوئی ہے اور سکیورٹی فورسز کے اہلکار بحفاظت واپس اپنے ٹھکانوں کو پہنچ گئے ہیں۔

نامہ نگار دلاورخان وزیر کے مطابق تحصیل ماموند کے گاؤں لغڑی افغان سرحد کے قریب واقع ہے اور تحریک طالبان پاکستان کے نائب امیر فقیر محمد کا تعلق بھی اسی گاؤں کے قریب ایک دوسرے گاؤں سوئے سے ہے۔

تحصیل ماموند پر اس وقت فوج کا کنڑول ہے لیکن اس سے پہلے جب اس علاقے پر طالبان کا دور دورہ تھا تو طالبان کا مرکزی دفتر اور عدالتی نظام بھی ماموند ہی میں قائم تھا۔

اسی بارے میں