کالعدم تحریکِ طالبان کا رکن گرفتار

فائل فوٹو
Image caption کراچی سے گرفتار طالبان رکن بیت اللہ محسود کا قریبی ساتھی سمجھا جاتا ہے۔

پاکستان کے صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں پولیس نے ایک کارروائی کے دوران کالعدم تحریکِ طالبان پاکستان کے اہم رکن اور بیت اللہ محسود کے قریبی ساتھی فضل حسین محسود کو گرفتار کرلیا ہے۔

کراچی کے کرائم انویسٹی گیشن ڈیپارٹمنٹ (سی آئی ڈی ) کے ایس ایس پی فیاض خان کی سربراہی میں پولیس نے فضل حسین محسود کو مولوی تمیز الدین خان روڈ کے قریب سلطان آباد کے علاقے گرفتار کیا۔

نامہ نگار حسن کاظی کے مطابق سی آئی ڈی کےایس ایس پی فیاض خان نے بی بی سی کو بتایا کہ ملزم کا تعلق تحریکِ طالبان پاکستان کے قاری فیض محمد گروپ سے ہے اور اس کے قبضے سے ایک ٹی ٹی پستول اور چار کارتوس برآمد ہوئے۔

انہوں نے بتایا کہ ملزم نے انکشاف کیا ہے کہ کالعدم تحریکِ طالبان پاکستان کے سربراہ بیت اللہ محسود کا قریبی ساتھی ہے اور پانچ سال پہلے جب بیت اللہ محسود وزیرستان میں لڑائی کے دوران زخمی ہوکر کراچی آیا تھا تو اس کے علاج اور رہنے کا انتظام فضل حسین محسود نے ہی سہراب گوٹھ کے علاقے میں کیا تھا۔

فیاض خان کے مطابق فضل حسین کی ذمہ داریوں میں ان تمام جنگجوؤں کے علاج معالجے اور قیام کا بندوبست کرنا ہے جو لڑائی کے دوران زخمی ہوکر علاج کروانے کی غرض سے کراچی آتے ہیں۔ اس کے علاوہ وہ کراچی سے لاکھوں روپے بطور فنڈز جمع کرکے طالبان کو بھی فراہم کرتا رہا ہے۔

یہ لوگ فنڈز کیسے حاصل کرتے ہیں اس بارے میں فیاض خان نے بتایا کہ یہ لوگ چوری ، ڈکیتی کی وارداتوں کے علاوہ ان تاجروں سے بھی بھتہ لیتے تھے جن کا تعلق ان کے علاقے وزیرستان سے ہوتا تھا اور وہ یہاں کراچی میں کاروبار کررہے ہوتے تھے، اس کے ساتھ ساتھ یہ نیٹو کے لیے تیل سپلائی کرنے والے ٹینکرز کے مالکان اور ٹھیکے داروں سے بھی بھتہ لیتے تھے۔

ایس ایس پی فیاض خان نے بتایا کہ فضل حسین محسود وانا اور وزیرستان میں پاکستان کی فوج اور حساس اداروں کے خلاف کارروائیوں میں بھی حصہ لے چکا ہے اور اس کے دہشت گردگروہوں سےگہرے تعلقات ہیں۔

ملزم سے ابھی تفتیش ہورہی ہے اور مزید انکشافات کی توقع کی جارہی ہے۔

اسی بارے میں