ڈرون حملے میں پانچ ہلاک

ڈرون
Image caption علاقے میں پہلی بھی کئی بار ڈرون حملے ہو چکے ہیں جن مقامی اور غیر ملکی طالبان شدت پسند ہلاک ہو چکے ہیں

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں حکام کا کہنا ہے کہ امریکی جاسوس طیارے کے حملے میں پانچ شدت پسند ہلاک اور دو زخمی ہوگئے ہیں۔

میر علی میں ایک اعلیٰ سرکاری اہلکار نے بی بی سی کے نامہ نگار دلاور خان وزیر کو بتایا کہ میر علی سے دس کلومیٹر دور شمال کی جانب امیر خوند خیل کے علاقے شین پونڑ میں ایک گاڑی کو امریکی جاسوس طیارے سے داغے گئے میزائل سے نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں گاڑی میں سوار پانچوں افراد ہلاک ہو گئے۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ امریکی جاسوس طیارے سے چار میزائل فائر کیے گئے جس سے گاڑی بھی مکمل طور پر تباہ ہو گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہلاک ہونے والے تمام شدت پسند تھے جن کا تعلق حافظ گل بہادر گروپ سے بتایا جاتا ہے۔

مقامی لوگوں کے مطابق یہ گاڑی پیر کی شام میرعلی بازار گاؤں سپین وام کی جانب جا رہی تھی کہ راستے میں امریکی جاسوس طیارے نے نشانہ بنایا۔ مقامی لوگوں کے مطابق گاڑی میں آگ لگی ہوئی تھی اور لاشیں بھی مکمل طور پر جل گئی تھیں۔

بعد میں مقامی طالبان دو گاڑیوں میں آئے اور انہوں نے سفید کپڑے میں لپیٹ کر لاشوں کو نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا۔ اس علاقے میں پہلی بھی کئی بار ڈرون حملے ہو چکے ہیں جن مقامی اور غیر ملکی طالبان شدت پسند ہلاک ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں