سیلابی ریلوں میں سولہ ہلاک

Image caption پہاڑوں سے سیلابی ریلے آئے جنہوں نے وسیع پیمانے پر تباہی مچائی۔

پاکستان کے شمالی علاقے کوہستان میں بارشوں اور سیلابی ریلوں کے باعث سولہ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

حکام کے مطابق بدھ کی شام تحصیل کھندیا کی یونین کونسل گبرال میں شدید بارشیں ہوئیں جس کے بعد پہاڑوں سے سیلابی ریلے آئے جنہوں نے وسیع پیمانے پر تباہی مچائی۔

ہمارے نامہ نگار ذوالفقار علی کو کوہستان کے ڈپٹی کمشنر امتیاز حسین شاہ نے بتایا کہ اس قدرتی آفت میں سولہ افراد کی ہلاکت کی تصدیق ہوئی ہے جن کی لاشیں برآمد کرلی گئی ہیں۔ یہ لاشیں کرنگ گاؤں سے برآمد کی گئی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے کیونکہ مقامی لوگوں نے اطلاع دی ہے کہ وہاں نالے میں کچھ اور لاشیں پھنسی ہوئی ہیں جن کو رسائی نہ ہونے کی وجہ سے ابھی تک نہیں نکالا جا سکا ہے۔ تاہم انھوں نے نالے میں پھنسی ہوئی لاشوں کی تعداد نہیں بتائی۔

تحصیل کھندیا ایک پہاڑی علاقہ ہے اور گزشتہ سال اس کو جانے والی پینتیس کلومیٹر کی سڑک بارشوں کے باعث تباہ ہو گئی تھی اور اب اس علاقے میں پیدل ہی پہنچا جا سکتا ہے۔

ڈپٹی کمشنر کا کہنا ہے کہ گبرال ایک دورافتادہ علاقہ ہے اور کوہستان کے ضلعی ہیڈ کوارٹر سے چار پانچ دن کی مسا فت پر ہے۔ امتیاز حسین کا کہنا ہے کہ ضلعی امدادی ٹیمیں ضروری اشیاء اور ادویات لے کر روانہ کر دی گئی ہیں لیکن انہیں پہنچنے میں چار سے پانچ روز لگ سکتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ انھوں نے وفاقی اور صوبائی حکومت سے بھی متاثرہ علاقے میں فوری امدادی کارروائی کی درخواست کی ہے۔

اسی بارے میں