آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 10 ستمبر 2011 ,‭ 04:22 GMT 09:22 PST

9/11، نوجوان نسل پر اثرات

میڈیا پلئیر

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

متبادل میڈیا پلیئر چلائیں

امریکہ میں ہوئے دہشت گرد حملوں کے بعد شروع ہونے والی دہشت گردی کے خلاف جنگ نے جہاں پاکستان کی معیشت، سیاست اور طرز زندگی کو مجموعی طور پر متاثر کیا۔وہیں اس کے اثرات اس دوران جوان ہونے والی پاکستانی نسل پر بھی پڑے۔ ان اثرات کی نشاندہی پاکستان کی نوجوان نسل کی نمائندگی کرنے والے چھبیس سالہ سماجی کارکن عمران خان، پچیس سالہ مصنفہ فضہ زاہرا اور میڈیا میں کام کرنے والے محمد فرقان اور امان ترین نے بی بی سی کے ساتھ ایک بحث میں کی۔

بی بی سی اسٹوڈیوز میں ہونے والی اس گفتگو میں شامل نوجوانوں سے ہماری ساتھی ارم عباسی نے پوچھا کہ گیارہ ستمبر کے حملوں کے بعد شروع ہونے والی لڑائی نے ان پر کیا اثرات مرتب کیے۔ پہلے جواب دیتے ہیں عمران خان۔ پاکستانی نوجوان اور دہشت گردی کے خلاف جنگ، مباحثے کی میزبان تھیں ارم عباسی۔

[an error occurred while processing this directive]

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔