لاہور: ڈینگی متاثرین میں اضافہ، سکول بند

ڈینگی وارڈ تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ’ڈینگی بخار سے پیر کے روز مزید دو افراد کی موت واقع ہوئی ہے‘

صوبہ پنجاب میں ڈینگی وائرس کے مزید پانچ سو انہتر مریض سامنے آئے ہیں جس کے بعد صوبے میں اس وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد چار ہزار تین سو ستائیس ہوگئی ہے۔

ادھر پنجاب حکومت نے ڈینگی وائرس کے خطرے کے پیش نظر صوبائی دارالحکومت لاہور میں حفاظتی اقدامات کے طور تمام تعلیمی اداروں کو دس روز کے لیے بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔

تعلیمی اداروں کی بندش کے حوالے سے باضابطہ نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگار عبادالحق کے مطابق صوبائی حکومت کے اس فیصلے کے تحت لاہور کے تمام سرکاری اور نجی تعلیمی ادارے بند کرنے کے اعلان پر چودہ ستمبر یعنی بدھ کے روز سے عمل درآمد ہوگا۔

اس سے پہلے پنجاب کے وزیر تعلیم میاں مجتبیْ شجاع الرحمن کی ہدایات پر ڈینگی مچھر کے کاٹنے کے خطرے کے پیش نظر صوبے بھر کے تمام سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں میں مارننگ اسمبلی پر دو ماہ کے لیے پابندی لگادی گئی تھی۔

کشمنر لاہور جواد رفیق نے ڈینگی وائرس کی وجہ سے لاہور کے تمام سوئمنگ پولز کی بندش کے احکامات بھی جاری کر دیے ہیں۔

پنجاب کے محکمہ صحت کے حکام کے مطابق صوبے بھر میں ڈینگی وائرس سے متاثر ہونے والے پانچ سو انہتر نئے کیسز سامنے آنے کے بعد پنجاب میں ڈینگی کے مریضوں کی کل تعداد سو چار ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔

صوبائی سیکرٹری صحت جہانزیب خان کے بقول لاہور میں مزید چار سو ننانوے افراد میں ڈینگی وائرس کی تشخیص ہوئی ہے اور اب لاہور میں ڈینگی بخار والے مریضوں کی تعداد تین ہزار پانچ سو پچیس تک جا پہنچی ہے۔

صوبائی حکام کے مطابق فیصل آباد میں ڈینگی بخِار کے مریضوں کی تعداد ایک سو چھیانوے جبکہ راولپنڈی میں یہ تعداد باون ہے۔

دریں اثناء وزیر اعلیْ پنجاب شہباز شریف نے ہدایت کی ہے کہ سرکاری ہسپتالوں میں انتظامی بلاک کو ڈینگی بخار کے مریضوں کے لیے وارڈ میں تبدیل کردیا جائے۔

ادھر معروف پاپ گلوکار ابرارالحق نے ڈینگی وائرس سے متاثرہ مریضوں کے لیے پنجاب بھر میں پچاس کمیپ لگانے کا اعلان کیا ہے۔

ابرارالحق کے بقول صوبے میں لگائے جانے والے پچاس کیپموں میں سے دس کمیپ لاہور کے مختلف علاقوں میں قائم کیے جائیں گے اور ان تمام کمیپوں میں ڈینگی بخار میں مبتلا مریضوں کے بلامعاوضہ ٹیسٹ کیے جائیں گے۔

علاوہ ازیں پنجاب حکومت نے پچیس ستمبر کو ہونے والے نیشنل ٹی ٹونٹی ٹورنامنٹ سے پہلے لاہور کے قذافی سٹیڈیم میں مچھر مار ادویات کا سپرے کروانے کا بھی فیصلہ کیا ہے تاکہ ڈینگی وائرس سے ٹورنامنٹ میں شامل کوئی کھلاڑی متاثر نہ ہوجائے۔

صوبائی سیکرٹری پنجاب جہانزیب خان کے مطابق ڈینگی وائرس سے بچاو کے لیے آگہی مہم کے دوران اب لاہور شہر میں ہوائی جہاز کے ذریعے بھی پمفلٹ پھینکیں جائیں گے۔

اسی بارے میں