ڈرون طیارے کے حملے میں تین غیر ملکی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ’امریکی جاسوس طیارے نے ایک نان کسٹم پیڈ گاڑی کو نشانہ بنایا‘

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں ہفتہ کو حکام کا کہنا ہے کہ ایک مبینہ امریکی ڈرون حملےمیں تین غیر مُلکی شدت پسند ہلاک ہوئے ہیں۔

ہلاک ہونے والے تینوں افراد غیر مُلکی تُرکمانستان کے باشندے تھے جن کا تعلق القاعدہ سے بتایا جاتا ہے۔ البتہ ان میں کسی اہم فرد کی ہلاکت کی اطلاع نہیں ملی ہے۔

شمالی وزیرستان میں ایک سرکاری اہلکار نے بی بی سی کے نامہ نگار دلاور خان وزیرکو بتایا کہ یہ واقعہ جمعہ اور سنیچر کے درمیان رات شمالی وزیرستان کی تحصیل میرعلی میں شہر سے تقریباً پانچ کلومیٹر دور جنوب کی جانب گاؤں خُوشحالی میں اس وقت پیش آیا جب ایک مُبینہ امریکی جاسوس طیارے نے ایک نان کسٹم پیڈ گاڑی کو نشانہ بنایا۔

انہوں نے بتایا کہ اس حملے کے نتیجے میں تین غیر مُلکی جنگجو ہلاک ہوئے ہیں اور لاشوں اور زخمیوں کو مقامی طالبان نے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے۔

سرکاری اہلکار کا کہنا تھا کہ حملے میں گاڑی بھی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔ اہلکار کے مطابق اسی علاقے میں چند دن پہلے دو مقامات پر بھی حملے ہوئے تھے جس کے نتیجہ میں دو غیر مُلکی عرب ہلاک ہوگئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ جاسوس طیارے سے دو میزائل داغے گئے تھےاور دونوں میزائل گاڑی پر ہی گرے ہیں۔

مقامی لوگوں کے مطابق گزشتہ چند دنوں سے شمالی وزیرستان کے مختلف علاقوں پر جاسوس طیاروں کی پروازیں جاری تھیں اور حملے کے دوران فضاء میں دو جاسوس طیارے موجود تھے اور اس وقت بھی شمالی وزیرستان کے مختلف علاقوں میں کئی ڈرون طیارے محو پرواز ہیں۔