امریکہ کو پاکستان کی ضرورت ہے: گیلانی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption شدت پسند پاکستان کے مفاد میں نہیں ہیں: وزیراعظم گیلانی

پاکستان کے وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ کل جماعتی کانفرنس کی وجہ سے امریکہ نے پیغام دیا ہے کہ اسے پاکستان کی ضرورت ہے اور پاکستان کے بغیر امریکہ جنگ نہیں جیت سکتا۔

سنیچر کو یہ بات انہوں نے صوبہ پنجاب کے شہر ملتان کے نواحی علاقے بلی والا میں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

لاہور سے نامہ نگار علی سلمان کے مطابق وزیر اعظم نے کہا کہ وہ پاکستانی قوم کو مبارکباد دیتے ہیں کہ امریکہ نے ایڈمرل مائیک مولن کے اس بیان سے بھی دوری کا اظہار کیا ہے جو انہوں نے پاکستان کے خلاف دیا تھا۔ان کے بقول یہ پاکستانی عوام کے اتحاد کی جیت ہے، کل جماعتی کانفرنس کی اور مفاہمت کی پالیسی کی جیت ہوئی ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ کل جماعتی کانفرنس سے ثابت کیا ہے کہ پاکستانی ایک قوم ہیں اور ملک کے دفاع کے لیے سیسہ پلائی دیوار کی طرح ایک ہیں اور کسی کو اجازت نہیں دیتے کہ کوئی پاکستان کی سالمیت کے خلاف برا سوچ سکے۔

انہوں نے کہا کہ لیکن اس بات کا یہ مطلب نہیں ہے کہ پاکستان جنگ چاہتا ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان اپنے ملک کےاندر اور باہر امن چاہتا ہے اوراس کی خاطر خطے میں ایک بڑا کردار ادا کرنے کو تیار ہے۔

وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ پاکستان امن کی خاطر پوری دنیا سے مذاکرات کرنے کو تیار ہے لیکن انہوں نے کہا دنیا کا کوئی ملک بڑا ہو یا چھوٹا پاکستان برابری کی بنیاد پر بات کرے گا اور باہمی مفاد کو مدنظر رکھ کر بات کی جائے گی۔

وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ مسلمان قوم کسی سے کم نہیں ہے لیکن ہم میں بہت سے ایسے لوگ ہیں جو ہماری صفوں میں رہ کر مذہب اسلام کو بدنام اور دنیا میں رسوا کر رہے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ شدت پسند پاکستان کے مفاد میں نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان کے صدر حامد کرزئی ان کے بھائی اور دوست ہیں اور انہیں کچھ غلط فہمی ہے۔

پاکستانی وزیر اعظم نے کہا پاکستانی قوم بہت خوددار ہے وہ نہ تو کسی کے معاملات میں دخل دینا چاہتی اور نہ ہی یہ چاہتی کہ کوئی اس کے معاملات میں مداخلت کرے۔

اسی بارے میں