بلوچستان: صوبائی وزیر پر بم حملہ

فائل فوٹو، کار بم حملہ تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بلوچستان میں اس سے پہلے بھی کئی بار سیاسی رہنماؤں کو ٹارگٹ کرنے کی کوشش کی گئی ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے صوبائی وزیر میر ثناء اللہ زہری کے قافلے پر کوئٹہ سےخضدار جاتے ہوئے نامعلوم افراد نےسوراب کے قریب بم دھماکے سے حملہ کیا ہے۔

جمعہ کی شام کو ہونے والے اس بم حملے میں صوبائی وزیر اور قافلے کے دیگر ارکان محفوظ رہے ہیں جبکہ صوبائی وزیرکے محافظ کی فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہوا ہے۔

بلوچ لیبریشن فرنٹ کے ترجمان ڈوڈا بلوچ نے حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

دوسری جانب کوئٹہ میں مسجد روڈ پر جمعہ کی رات کو نامعلوم مسلح افراد نے پی ایم اے بلوچستان یا پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے صوبائی صدر مزار خان بلوچ کی گاڑی پر فائرنگ کی ہے۔

فائرنگ کے نتیجے میں مزار خان بلوچ شدید زخمی ہوگئے ہیں اور انھیں فوری طور پر علاج کے لیے سول ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ بلوچستان میں اس سے پہلے وزیراعلیٰ نواب اسلم رئیسانی سمیت دیگر کئی سیاسی رہنماؤں پر حملوں کے واقعات پیش آ چکے ہیں۔

بین لاقوامی غیر سرکاری تنظیمیں بلوچستان کی صورتحال پر متعدد بار تشویش کا اظہار کر چکی ہیں۔

اسی بارے میں