بھارتی ہیلی کاپٹر کو واپس بھیج دیا گیا

لیما ہیلی کاپٹر، فائل فوٹو  تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پاکستان میں اتارا جانے والا ہیلی کاپٹر لیما کہلاتا ہے۔

پاکستان کی فوج نے کہا ہے کہ بھارت کے جس فوجی ہیلی کاپڑ کو پاکستانی کی فضائی حدود کی خلاف ورزی پر گلگت بلتستان کے علاقے اسکردو میں اتار لیا تھا واپس بھارت بھیج دیا گیا ہے۔

پاکستان کی فوج کے ترجمان اطہر عباس نے بی بی سی کو بتایا کہ ‘دونوں ملکوں کے افواج کےڈی جی ایم اوز (ڈائریکڑ جنرل ملڑی آپریشنز) کے درمیان بات چیت میں یہ معاملہ طے پا گیا تھا اور اس کو عملے سمیت واپس کر دیا گیا ہے اور یہی اس میں دبارہ ایندھن بھرا گیا تھا’۔

اس سے پہلے اطہر عباس نے کہا تھا کہ پاکستان کی فوج نے اپنی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے والے بھارتی ہیلی کاپڑ کو گلگت بلتستان کے علاقے اسکردوں میں اتار لیاگیا۔

انھوں نے کہا تھا کہ بھارتی فوج کا لامہ ہیلی کاپڑ پاکستان کے حدود کے کافی اندر گھس آیا تھا جس کے بعد پاکستانی فوج نے یہ کارروائی کی تھی۔

اسکردو کے دوسری جانب لائن آف کنٹرول کے اس پار بھارت کے زیر انتظام کشمیر کا علاقہ کارگل ہے اور حکام کے مطابق یہ ہیلی کاپڑ کارگل سے ہی پاکستان کے فضائی حدود میں داخل ہوا تھا۔

پاکستان کی فوج کے ترجمان اطہر عباس نے کہا تھا کہ ہیلی کاپڑ اور اس میں سوار تین پائیلٹ اور ایک عملے کے سربراہ کو حفاظتی تحویل میں لے لیا گیا تھا۔

فوج کے ترجمان نے کہا ‘بظاہر یہ لگتا ہے کہ یہ ہیلی کاپڑ غلطی سے آیا ہے اور اس میں ہمیں کوئی بد نیتی نظر نہیں آرہی ہے’۔