پنشن کے حصول میں مشکلات کا سامنا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں ریلوے کا ایک ریٹائرڈ ملازم محمود خان پنشن کے حصول کے دوران ہونے والی دھکم پیل سے دم توڑ گیا ہے۔

پاکستان ریلوے کے ریٹائرڈ ملازمین کو پنشن کے حصول میں شدید پریشانی کا سامنا ہے۔

بدھ کو ریٹائرڈ ریلوے ملازمین کی ایک بڑی تعداد لاہور کے علاقہ مغل پورہ میں نیشنل بنک آف پاکستان کے باہر پنشن کے حصول کے لیے جمع تھی۔

ان میں سےاکثر ریٹائرڈ ملازمین تو سردی کے باوجود منگل کی رات سے ہی بنک کے باہر اس انتظار میں بیٹھے رہے کہ صبح بنک کے کھلتے ہی وہ پنشن حاصل کر سکیں جبکہ ان میں سے کچھ کی حالت رات سردی میں گزارنے کے باعث کافی خراب ہو گئی تھی۔

لاہور سے عدیل اکرم کے مطابق ریلوے کے ریٹائرڈ ملازمین کا کہنا تھا کہ وہ پنشن نہ ملنے کے باعث شدید مالی مشکلات کا شکار ہیں اور ُانہوں نے حکومت سے اپیل کی کہ ان کے مسا ئل کو جلد از جلد حل کیا جائے ۔

دریں اثناء صدر پاکستان آصف علی زرداری نے ریلوے کے ریٹائرڈ ملازم کی ہلاکت اور پنشن کے حصول کے لیے ملازمین کو ہونے والی پریشانی کا نوٹس لے کر انکوائری کا حکم دے دیا ہے ۔

صدارتی ترجمان فرحت اللہ بابر کے مطابق صدر مملکت نے سیکریٹری ریلوے کو فوری طور پر لاہور پہنچنے اور معاملے کی انکوائری کر کے تین دن میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت جاری کی ہے۔

جنرل مینجر ریلوے سعید اختر نے بی بی سی کو بتایا کہ پنشن کے معاملات کو درست کر لیا گیا ہے اور آئندہ ملازمین کو ایسی پریشانی کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔

ریٹائرڈ ریلوے ملازمین کا کہنا تھا کہ اُنہوں نے اپنی ساری زندگی ریلوے کی خدمت میں صرف کی لیکن ان خدمات کا صلہ یہ ملا کہ کئی ماہ سے پنشن بند ہے۔جس سے اُن کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا ہے۔

اسی بارے میں