قریشی شمولیت کا اعلان کرتے ہیں یا۔۔۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان جلسوں کی چومکھی لڑائی لڑتے ہوئے ایک فاتح کی طرح جلسے پہ جلسہ کرتے اورمنزل پر منزلیں مارتے سندھ میں داخل ہو رہے ہیں ان کا بڑا پڑاؤ کراچی میں ہوگا۔

لاہور کے تیس اکتوبر کے جلسے کی کامیابی کے بعد وہ جو جلسہ کر رہے ہیں اس میں لوگوں کی حیرت انگیز زیادہ تعداد پا رہے ہیں۔

جس شہر سے جلسہ کر کے گذرتے ہیں لگتا ہے کہ انہوں نے وہاں پر دو حکومتی پارٹیوں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نون کا صفایا پھیر دیا ہے۔

وہ لاہور سے نکلے تو چکوال میں جلسہ کیا جو چکوال کی حالیہ تاریخ کا سب سے بڑا جلسہ قرار دیا جا رہا ہے۔

وہاں کے ضلعی ناظم سمیت چند اہم شخصیات نے ان کی جماعت میں شمولیت اختیار کی۔وہاں سے خیبر پختونخواہ گئے تو ظفر اقبال جھگڑا کے علاقے میں بڑا جلسہ کیا جہاں مسلم لیگ قاف اور اے این پی کے رہنماؤں نے ان کی پارٹی میں شرکت کی۔

ملتان میں جلسہ کر کے جلوس لیکر نکلے تو رحیم یار خان پہنچے جہاں ظفر وڑائچ جیسے اہم سابق مسلم لیگی رہنماوں نے ان کی جماعت جوائن کر لی۔

عمران خان کے جلسوں کے بعد مسلم لیگ نون اور تحریک انصاف کے درمیان ممکنہ انتخابی امیدواروں اور کارکنوں کے لیے کھینچا تانی شروع ہوگئی ہے۔

چکوال میں عمران خان نے سابق ناظم کو ساتھ ملایا تو مسلم لیگ نون نے اپنے باغی عبدالمجید ملک کو’معافی‘ دیکر اپنے ساتھ ملا لیا۔اسی نوعیت کی کھینچا تانی ہر اس ضلع میں زور پکڑ جاتی ہے جہاں عمران خان جلسہ کرتے ہیں۔

ایک مثال شاہ محمود قریشی کی ہے ویسے تو شاہ محمود قریشی نے سب سے طویل ملاقات تو شریف برادران سے کی ہے لیکن عمران خان نے کہا تھا کہ شاہ محمود قریشی تحریک انصاف میں شامل ہو رہے ہیں۔

مسلم لیگ نون کے مرکزی رہنما نے ایک نجی محفل میں گفتگو کرتے ہوئے بی بی سی کو بتایا کہ شاہ محمود قریشی نے مسلم لیگ نون سے مطالبہ کیا تھا کہ انہیں قومی اسمبلی کی دو اور صوبائی اسمبلی کی چار نشستوں کی انتخابی ٹکٹ دی جائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

نواز شریف نے اس مطالبے پر کوئی فوری جواب نہیں دیا اور شاہ محمود قریشی نے ان کی جماعت میں شمولیت کا کوئی اعلان نہیں کیا۔

عمران خان نے یہ بھی کہا تھا کہ اگر شاہ محمود قریشی ان کی جماعت میں شامل ہوں گے تو تحریک انصاف کارکنوں سمیت ان کے گھوٹکی جلسے میں شریک ہوں گے۔

عمران خان اب ایک جلوس لیکر شاہ محمود قریشی کے گھوٹکی کے جلسے میں جا رہے ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ وہ عمران خان کو خوش آمدید کہیں گے۔

عمران خان کارکنوں کا جلوس لیکر رحیم یار خان تک پہنچ گئے ہیں دیکھنا یہ ہے کہ شاہ محمود قریشی ان کی جماعت میں شمولیت کا اعلان کرتے ہیں یا ابھی اپنے آپ کو’ آزاد‘ہی رکھتے ہیں۔

اسی بارے میں