ڈاکٹر فائی کا اعتراف: ’آئی ایس آئی سے رقم لی‘

غلام نبی فائی تصویر کے کاپی رائٹ KAC
Image caption غلام نبی فائی کو جولائی میں گرفتار کیا گیا تھا۔

ایک کشمیری نژاد امریکی شہری غلام نبی فائی نے امریکی قوانین کے خلاف ورزی کرتے ہوئے پاکستانی خفیہ ادارے سے لاکھوں ڈالر وصول کرنے کا اعتراف کر لیا ہے۔

باسٹھ سالہ غلام نبی فائی پر الزام تھا کہ وہ واشنگٹن میں انٹر سروسز انٹیلیجنس یعنی آئی ایس آئی کے کہنے پر کشمیر کی آزادی سے متعلق حمایت حاصل کرنے کے لیے کام کر رہے تھے۔

انہیں جولائی میں گرفتار کیا گیا تھا۔ دوسری جانب پاکستان کی حکومت نے غلام نبی فائی کی سرگرمیوں سے متعلق لاعلمی کا اظہار کیا ہے۔

استغاثہ کا کہنا تھا کہ غلام نبی فائی جو بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں پیدا ہوئے اور ایک دوسرا شخص ظہیر احمد جو پاکستانی نژاد امریکی ہے دونوں پر الزام ہے کہ انہوں نے پاکستانی امداد سے تقریباً چالیس لاکھ ڈالر خرچ کر کے متنازعہ کشمیری ریاست کے حوالے سے امریکہ کے موقف پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی۔

استغاثہ کا کہنا تھا کہ ظہیر احمد ایسے افراد کو تلاش کرتے جو بظاہر چندہ دینے والے افراد کا کردار ادا کرتے۔ ان کا عطیہ کیا ہوا پیسہ کشمیری امیریکن کونسل نامی تنظیم کو دیا جاتا جو درحقیقت پاکستانی حکومت کی جانب سے دیا جاتا رہا۔ ظہیر احمد گرفتار نہیں ہیں اور خیال ہے کہ وہ پاکستان میں ہے۔

امریکی اٹارنی نیل میک برائڈ نے ایک بیان میں کہا کہ ’بیس سال سے غلام نبی فائی خفیہ طور پر لاکھوں ڈالرز پاکستانی انٹیلیجنس سے حاصل کرتے رہے اور اس بارے میں امریکی حکومت سے جھوٹ بولتے رہے۔‘

بیان میں کہا گیا کہ ’ آئی ایس آئی سے پیسے لے کرکام کرنے والے اہلکار کی حیثیت سے اس نے پاکستانی نگرانوں کے کہنے پر امریکی منتحب نمائندوں سے ملاقاتیں کیں، اعلٰی پیمانے کی کانفرنسز کے لیے امداد دی اور واشنگٹن میں فیصلہ سازوں کے سامنے کشمیر کے مسئلے کو اجاگر کیا۔‘

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ غلام نبی فائی کا اعترافِ جرم ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب امریکہ اور پاکستان کے درمیان تعلقات انتہائی خراب ہیں۔

کشمیری امریکن کونسل کا بجٹ بہت کم ہے اور اس کا کہنا ہے کہ اس نے کوئی غیر ملکی امداد وصول نہیں کی۔ امریکہ کا الزام ہے کہ اس تنظیم نے امریکی انتخابی مہم میں رقم مہیا کی، کئی کانفرنسز اور دیگر تقریبات کے لیے مدد کی جن میں وائٹ ہاؤس اور سٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے حکام سے ملاقاتیں شامل تھیں۔

کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان دہائیوں سے متنازعہ مسئلہ رہا ہے۔ دونوں ممالک کا دعوٰی ہے کہ یہ مکمل طور پر ان کی ریاست ہے اور اس کے لیے دونوں میں تین جنگیں بھی ہو چکی ہیں۔

اسی بارے میں