پشاور میں دو سرکاری اہلکار قتل

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

پاکستان کے صوبہ خیبر پختون خوا کے دارالحکومت پشاور میں حکام کا کہنا ہے کہ دو الگ الگ واقعات میں نامعلوم مسلح افراد نے خفیہ ادارے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر اور پولیس انسپکٹر کو گولیاں مارکر قتل کردیا ہے۔

پولیس کے مطابق یہ واقعات منگل کو پشاور کے علاقے یکہ توت اور بڈھ بیر میں پیش آئے۔

یکہ توت پولیس سٹیشن کے انچارج احسان شاہ نے بی بی سی کے نامہ نگار رفعت اللہ اورکزئی کو بتایا کہ خفیہ ادارے آئی بی کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر سراج الدین عشاء کی نماز پڑھ کر گھر جارہے تھے کہ نامعلوم افراد نے ان پر فائرنگ کردی جس سے وہ موقع ہی پر ہلاک ہوگئے۔

انہوں نے کہا کہ ملزمان کی تلاش کےلئے علاقے میں سرچ آپریشن شروع کردیا گیا ہے تاہم ابھی تک کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔

مقتول اہلکار آئی بی ہیڈ کوارٹر پشاور میں تعینات تھے۔ بتایا جاتا ہے کہ اس سے پہلے وہ قبائلی علاقوں میں کئی سالوں تک کام کرچکے تھے۔ تاہم فوری طورپر اس واقعہ کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی۔

ادھر پشاور کے مضافاتی علاقے بڈھ بیر میں بھی نامعلوم مسلح افراد نے پولیس انسپکٹر کو فائرنگ کرکے ہلاک کردیا ہے۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ آج صبح اس وقت پیش آیا جب سڑک پر جانے والے ایک موٹر سائیکل سوار نے انقلاب چوکی کے انچارج انسپکٹر مرسلین پر اندھددُھند فائرنگ کردی جس سے وہ شدید زخمی ہوئے اور بعد میں ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ گئے۔

ابھی تک کسی تنظیم نے ان واقعات کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

اسی بارے میں