کوہاٹ: پولیس موبائل پر حملہ، دو ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ہلاک ہونے والوں میں پولیس موبائل کا ڈرائیور اور ایک سپاہی شامل ہے

خیبر پختونخوا کے جنوبی ضلع کوہاٹ میں گورنر خیبر پختونخواہ کے دورے کے موقع پر نامعلوم شدت پسندوں نے پولیس کی گاڑی پر حملہ کیا ہے۔

حملے کے نتیجے میں دو پولیس اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔

کوہاٹ میں ایک پولیس افسر خان اللہ نے بی بی سی کے نامہ نگار دلاورخان وزیر کو بتایا کہ پیر کی صبح گورنر خیبر پختونخوا مسعود کوثر کوہاٹ میں گریژن کالج کے دورے پر آنا تھا جن کی سکیورٹی کے لیے مختلف علاقوں سے پولیس کی نفری کالج پہنچ رہی تھی۔

انہوں نے کہا کہ ایک گاڑی پولیس کی نفری کو کالج چھوڑ کر واپس کوہاٹ شہر جا رہی تھی کہ راولپنڈی روڈ پر واقع سیمنٹ فیکٹری کے قریب نامعلوم مُسلح شدت پسندوں نے اس پر حملہ کر دیا۔حملے کے نتیجے میں دو پولیس اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ اس واقعہ کے بعد پولیس کی بھاری نفری علاقے میں پہنچ گئی ہے لیکن ابھی تک کسی قسم کی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔

اہلکار کے مطابق جس جگہ یہ واقعہ پیش آیا ہے وہاں ایک ہوٹل بھی موجود ہے مگر پولیس نفری جب وہاں پہنچی تو وہاں ہوٹل کا سارا عملہ بھی غائب تھا۔

یاد رہے کہ کوہاٹ میں اس سے پہلے بھی پولیس کے علاوہ سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کو نشانہ بنایا ہے جس میں ایک بڑی تعداد میں پولیس اہلکار، سکیورٹی فورسز کے اہلکار اور عام شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں