نومنتخب رکن صوبائی اسمبلی کےخلاف مقدمہ

پاکستان کے صوبہ سندھ کے ضلع ٹنڈو محمد خان سے پیپلز پارٹی کی رکن صوبائی اسمبلی وحیدہ شاہ کے خلاف الیکشن قوانین کے تحت مقدمہ درج کر لیاگیا ہے۔

وحیدہ شاہ پر ایک پولنگ سٹیشن پر پریزائڈنگ افسر حبیبہ میمن اور نائب اسسٹنٹ پریزائڈنگ افسر شگفتہ میمن کو ڈیوٹی کے دوران تھپڑ مارنے کے الزام میں مقدمہ درج کرایا گیا ہے۔ تاہم الیکشن کمیشن نے وحیدہ شاہ کی کامیابی کے نوٹیفیکیشن کا اجراء بھی روک دیا ہے۔

مقامی صحافی علی حسن کے مطابق جن قوانین کے تحت یہ مقدمہ درج کرایا گیا ہے اس میں الزام ثابت ہونے پر ملزمہ کو زیادہ سے زیادہ تین ماہ کی قید ہو سکتی ہے اور اگر ملزمہ کو سزا ہو گئی تو وہ نااہل قرار دی جاسکتی ہیں اور نااہلی کے بعد ان کی رکنیت ختم ہو جائے گی۔

وحیدہ شاہ ہفتے کے روز پولنگ سٹیشن پر اپنے مخالف امیدوار میر مشتاق تالپور کی ووٹر کی پرچی دیکھ کر اتنی طیش میں آگئی تھیں کہ انہوں نے پہلے تو اسسٹنٹ پریزائڈنگ افر شگفتہ میمن کو تھپڑ مارا اور پھر پلٹ کر پو لنگ اسٹیشن کی انچارج پریزائڈنگ افسر حبیبہ میمن کو تھپڑ مار دیا۔

انہوں نے پولیس انسپکٹر کی موجودگی میں شگفتہ میمن کو دوبارہ مارا۔ تاہم جب واقعہ ذرائع ابلاغ پر نشر ہوا تو وحیدہ شاہ متعلقہ پولنگ افسران کے گھروں پر معافی مانگنے پہنچ گئیں تھیں۔

وحیدہ شاہ کی اس حرکت کے بعد جب فوٹیج مختلف چینل پر چلی تو ٹنڈو محمد خان کی میمن برادری نے واقعے کی مذمت کی اور وحیدہ شاہ کی اس حرکت پر اعتراض کیا۔ ان کے اعتراض کے بعد وحیدہ شاہ پریزائڈنگ افسر کے گھر پہنچ گئیں جہاں حبیبہ میمن نے انہیں کہا کہ معاملہ تو اب الیکشن کمیشن حکام کے علم میں آگیا ہے اور اس لیے وہ بے بس ہیں۔

واٰضح رہے کہ ٹنڈو محمد خان کی میمن برادری کی اکثریت پیپلز پارٹی کی حامی تصور کی جاتی ہے۔

پریزیئڈنگ افسر اور اسسٹنٹ پریزائڈنگ افسر ہائی سکول ٹیچر کی حیثیت سے سرکاری اسکولوں میں ٹنڈو محمد خان میں ہی ملازم ہیں۔

اس واقعے کی تفصیلی رپورٹ صوبائی الیکشن کمشنر سونو خان بلوچ نے کمیشن کو روانہ کی تھی۔ کمیشن نے وحیدہ شاہ کی کامیابی کے نوٹیفیکیشن کے اجراء کو معاملے کی تحقیقات تک روک دیا ہے ۔

ٹنڈو محمد خان کے سیاسی حلقے کہتے ہیں کہ اپنے مرحوم شوہر محسن شاہ کے ایک انتخاب کے دوران بھی وحیدہ شاہ نے مردوں کے ایک پولنگ سٹیشن میں داخل ہو کر ایک مرد پولنگ افسر کو تھپڑ مارا تھا لیکن ان کے خلاف کوئی قانونی کارروائی نہیں ہو سکی تھی۔ محسن شاہ کا انتقال ایک ماہ قبل ہوا تھا اور پیپلز پارٹی نے وحیدہ شاہ کی درخواست پر انہیں ٹکٹ دیا تھا۔