مچھ:ایف سی کے اہلکاروں کی لاشیں برآمد

فائل فوٹو تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption ایف سی کے اہلکاروں کے حوصلے پست نہیں ہوں گے:ترجمان ایف سی

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے علاقے مچھ سے فرنٹیئر کور کے ان تین اہلکاروں کی لاشیں ملی ہیں جنہیں ایک ماہ قبل بلوچ مزاحمت کاروں نے اغواء کر لیا تھا۔

کوئٹہ میں فرنٹیئر کور کے ترجمان مرتضٰی بیگ نے بی بی سی کو بتایا کہ ان اہلکاروں کو رواں سال اکتیس جنوری کو مچھ کے علاقے مارگٹ میں ایف سی کے ایک کیمپ پر حملے کے دوران اغواء کیا گیا تھا۔

اس حملے میں ایف سی کے چودہ اہلکار ہلاک بھی ہوئے تھے اور اس واقعے کی ذمہ داری علیحدگی پسند تنظیم بلوچ لبریشن آرمی نے قبول کی تھی۔

بی بی سی کے نامہ نگار ایوب ترین کا کہنا ہے کہ ایف سی کے ان تین اہلکاروں کے اغواء کیے جانے کے بعد بلوچ لبریشن آرمی کا ایک بیان سامنے آیا تھا جس میں یہ کہا گیا تھا کہ ان تین اہلکاروں پر ایک علامتی عدالت میں باقاعدہ مقدمہ چلایا جائے گا۔

بی ایل اے کے ترجمان کے مطابق علیحدگی پسندوں کی اس علامتی عدالت نے ان تین اہلکاروں کو موت کی سزا سنا دی تھی۔

ایف سی کے ترجمان اس واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ اس سے ایف سی کے اہلکاروں کے حوصلے پست نہیں ہوں گے اور بلوچستان میں ترقی کی راہ میں رکاوٹ بنے ہوئے مسلح مزاحمت کاروں کے خلاف اسی طرح کارروائیاں جاری رہیں گی۔

اسی بارے میں