حتف دوئم میزائل کا کامیاب تجربہ

فائل فوٹو، پاکستان میزائل تصویر کے کاپی رائٹ AP

پاکستان نے زمین سے زمین تک مار کرنے والے میزائل حتف دوئم’ ابدالی‘ کا کامیاب تجربہ کیا ہے۔

پاکستان کے سرکاری خبر رساں ادارے اے پی پی کے مطابق ایک سو اسی کلومیٹر تک مار کرنے والا حتف دوئم میزائل جوہری اور روایتی ہتھیار لیجانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

اے پی پی کے مطابق حتف دوئم کا تجربہ زمین سے مار کرنے والے بلیسٹک میزائل سسٹم کی توثیق کے عمل کا حصہ ہے۔

اے پی پی نے پاکستانی فوج کے شعبۂ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے حوالے سے بتایا ہے کہ میزائل کے تجربے سے پاکستان کی سٹریٹیجک فورسز کو آپریشنل سطح کی صلاحیت ہو گی اور اضافی طور پر پہلے سے حاصل سٹریٹیجک اور ٹیکٹیکل معیار کی صلاحیت حاصل ہو گی۔

بیان کے مطابق حتف دوئم اپنے ہدف کو انتہائی درستگی سے نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق میزائل تجربے کو ڈائریکٹر جنرل سٹریٹیجک پلانز ڈویژن لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ خالد احمد قدوائی، کمانڈر آرمی سٹریٹیجک فورس کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل طارق ندیم گیلانی، مسلح افواج کے اعلیٰ افسران، سائنسدانوں اور سٹریٹیجک اداروں کے انجینئیرز نے دیکھا۔

اس سے پہلے اتوار کو بھارت نے درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے سپر سونک میزائل برہموس کا تجربہ کیا تھا۔

دو سو نوے کلومیٹر فاصلے تک مار کرنے والے میزائل کا تجربہ راجھستان کی پوکھران رینج میں کیا گیا تھا۔

پاکستان اور بھارت اکثر اس قسم کے تجربات کرتے رہتے ہیں۔

اسی بارے میں