’دنیا کو بیوقوف بنانے کی ناکام کوشش‘

لاپتہ
Image caption بلوچ لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے لگایا گیا ایک احتجاجی کیمپ

بلوچستان کی قوم پرست تنظیم بلوچ نیشنل وائس نے پاکستانی سینیٹ میں لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے منظور کی گئی قرارداد پر اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ یہ صرف اور صرف دنیا کو بیوقوف بنانے کی ناکام کوشش ہے۔

تنظیم کے ترجمان مقبول بلوچ نے ٹیلی فون پر بی بی سی اردو سروس سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’پاکستان کے ایوانوں کے ارکان میں اتنی اخلاقی جرات بھی نہیں کہ وہ بلوچستان میں لوگوں کو اغوا کرنے اور ان کی مسخ شدہ لاشیں پھینکنے والی پاکستانی فوج، آئی ایس آئی اور ایم آئی کا براہ راست نام لے سکیں‘۔

مقبول بلوچ کا کہنا تھا کہ اس وقت ڈیڑھ سو کے قریب بلوچ خواتین، ایک سو ستر سے زیادہ بلوچ کم سن بچوں سمیت کم از کم چودہ ہزار بلوچ لاپتہ ہیں جن میں سے اب تک چار سو سولہ افراد کی مسخ شدہ لاشیں مل چکی ہیں۔

انہوں نے کہا ان کی تنظیم یہ سمجھتی ہے کہ بلوچوں کے قتل عام میں پاکستانی فوج اور انٹیلی جنس کے اداروں کے ساتھ ساتھ پاکستانی پارلیمینٹ، بیوروکریسی اور عدلیہ بھی برابر کی ذمہ دار ہے اور پاکستانی میڈیا بلوچ مسئلے کو جان بوجھ کر نظر انداز کرکے سارے کھیل میں خاموش اتحادی کا کردار ادا کر رہا ہے۔

اسی بارے میں