وزیرستان: ڈرون حملے میں پانچ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption شمالی وزیرستان میں جمعرات کے روز دو ڈرون حملے کیے گئے۔

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں حکام کا کہنا ہے کہ ڈرون طیارے کے حملے میں کم از کم پانچ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

پولیٹکل انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی اردو کے دلاور خان وزیر کو بتایا کہ یہ حملہ جمعہ کو شمالی اور جنوبی وزیرستان کی سرحد پر واقع علاقے شین منڈ میں ہوا۔

اہلکار کے مطابق حملے میں ایک گاڑی پر دو میزائل داغے گئے اور اس کارروائی میں گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔

انہوں نے کہا کہ جس گاڑی کو نشانہ بنایا گیا اس میں پانچ افراد سوار تھے جو موقع پر ہی ہلاک ہوگئے۔

حکام کے مطابق اطلاعات ہیں کہ مرنے والوں میں غیر ملکی بھی شامل ہیں تاہم ابھی اس کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

پاکستان کے قبائلی علاقوں میں کئی سالوں سے شدت پسندوں کے خلاف ڈرون حملوں کا سلسلہ جاری ہے تاہم گزشتہ برس نومبر میں سلالہ چیک پوسٹ پر نیٹو افواج کے حملے کے بعد ان میں عارضی تعطل آ گیا تھا۔

امریکی غیر سرکاری اداروں کے اعداد و شمار کے مطابق وفاق کے زیرِ انتظام قبائلی علاقوں میں دو ہزار چار سے لے کر اب تک کل دو سو پچاسی سے زائد امریکی ڈرون حملے ہوچکے ہیں جن میں ہزاروں افراد مارے جا چکے ہیں۔

اسی بارے میں