کراچی: چھ افراد فائرنگ سے ہلاک

کراچی میں سنیچر کو فائرنگ کے مختلف واقعات میں چھ افراد ہلاک اور ایک شخص زخمی ہوگیا۔

بی بی سی کے نامہ نگار حسن کاظمی کے مطابق رات ڈھائی بجے سخی حسن چورنگی کے قریب سے عمران احمد نام کے شخص کی لاش ملی ہے جسے گولی مار کر ہلاک کیا گیا تھا۔ ابتدائی طور پر یہ بتایا گیا کہ مقتول پیپلز پارٹی کا کارکن ہے تاہم پیپلز پارٹی نے اس کی تردید کی ہے۔

علاقے کے تھانے تیموریہ کے تھانیدار کمال نسیم نے بتایا کہ مقتول کی ذاتی دشمنی بھی تھی اس لیے اس کیس کا اس پہلو سے بھی جائزہ لیا جا رہا ہے۔

ایک دوسرے واقعے میں لانڈھی کے علاقے چوالیس سی سے صبح سات بجے شاہد نام کے ایک رکشہ ڈرائیور کی لاش ملی ہے جسے گولیاں مار کر ہلاک کیا گیا۔ پولیس کے مطابق یہ بظاہر ٹارگٹ کلنگ کا واقعہ نہیں لگتا اور مقتول کو کہیں اور مار کر لاش لانڈھی میں پھینک دی گئی ہے۔

ایک اور واقعے میں ابراہیم حیدری تھانے کی حدود سے صبح سویرے ایک لاش ملی ہے جس کی جیب سے برآمد ہونے والے شناختی کارڈ کے مطابق اس کا نام شاہد ہے۔ علاقے کے تھانیدار نیک محمد جاکھرانی نے بتایا کہ ابھی تک مرنے والے کے ورثاء کا پتہ نہیں چل سکا۔

فائرنگ کے دیگر واقعات میں نیو کراچی، بلدیہ اور پیر آباد سے بھی تین لاشیں ملی ہیں جن کی ابھی تک شناخت نہیں ہوسکی ہے۔

واضح رہے کہ کراچی میں گزشتہ روز بھی فائرنگ کے واقعات میں پیپلز پارٹی کے تین کارکنوں سمیت پانچ افراد ہلاک ہوئے تھے۔ جبکہ جمعرات کو پی آئی بی کالونی میں فائرنگ کرکے تین پولیس اہلکاروں کو ماردیا گیا تھا۔ اس کے علاوہ جمعرات کو ہی ایس پلیر کی گاڑی پر خودکُش حملہ بھی ہوا تھا جس میں کم از کم چار افراد ہلاک اور چودہ زخمی ہوئے تھے۔

اس سے پہلے گزشتہ ہفتے کراچی میں تشدد کے مختلف واقعات میں ایم کیو ایم اور اے این پی کے کارکنان بھی مارے گئے تھے جس کے نتیجے میں شہر میں کئی روز تک کشیدگی برقرار رہی تھی۔

اسی بارے میں