کوئٹہ: فائرنگ سے چھ افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پولیس نے واقعے کو ٹارگٹ کلنگ قرار دیتے ہوئے بتایا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر کا تعلق ہزارہ قبیلے اورشیعہ مسلک سے تھا۔

بلوچستان کے دارلحکومت کوئٹہ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے چھ افراد ہلاک اور تین زخمی ہوگئے ہیں۔ ہلاک ہونے والوں کاتعلق ہزارہ قبیلے سے ہے تاہم فائرنگ کے بعد ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

کوئٹہ میں بی بی سی کے نامہ نگار ایوب ترین کے مطابق پیر کی شام کو نامعلوم مسلح افراد نے پرنس روڈ پر واقع جوتوں کی ایک دکان پر اس وقت فائرنگ کی جب وہاں لوگوں کی ایک بڑی تعداد خریداری میں مصروف تھی۔

فائرنگ کے نتیجے میں چھ افراد ہلاک اور تین زخمی ہوگئے ہیں جنہیں فوری طور پرسِول ہسپتال کوئٹہ منتقل کردیاگیا جس کے بعد نامعلوم مسلح افراد نے سول ہپستال میں داخل ہوکر ہوائی فائرنگ کی جس کے باعث عام لوگوں اور مریضیوں میں بھگدڑ مچھ گئی اور دکانداروں نے دکانیں بند کر دیں۔

پولیس نے واقعے کو ٹارگٹ کلنگ قرار دیتے ہوئے بتایا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر کا تعلق ہزارہ قبیلے اورشیعہ مسلک سے تھا۔

یاد رہے کہ انتیس مارچ کوکوئٹہ کے اسپنی روڈ پر نامعلوم افراد نے ایک سوزوکی وین پر فائرنگ کی تھی جس میں چھ افراد ہلاک ہوئے تھے جن میں سے چار کاتعلق ہزارہ قبیلے سے تھا۔

تاہم اس واقعے کے بعد سپریم کورٹ کے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے پولیس کو مذہب کے نام پر دہشت گردی روکنے کی ہدایت کی تھی۔

اسی بارے میں