نجی فضائی کمپنیوں کے طیاروں کا معائنہ شروع

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption جتنے بھی طیارے ہیں، ان سب کی مرحلے وار انسپیکشن ہوگی: ترجمان، ایوی ایشن اتھارٹی

پاکستانی وزارت دفاع کی ہدایات کی روشنی میں شہری ہوا بازی کے ادارے سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ملک میں نجی کمپنی کے طیاروں کے تکنیکی معائنے کا عمل شروع کر دیا ہے۔

حکام کے مطابق پہلے مرحلے میں بھوجا ایئر لائن کی طیاروں کا معائنہ کیا جا رہا ہے، جس کے بعد شاہین ایئر اور ایئر بلیو کے طیاروں کا معائنہ کیا جائے گا۔

سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ترجمان پرویز جارج نے بی بی سی اردو کے ریاض سہیل کو بتایا کہ کچھ ماہ قبل پاکستان کی قومی ایئر لائن پی آئی اے کی بھی شیک ڈاؤن انسپیکشن کی گئی تھی۔

انہوں نے کہا ’جتنے بھی طیارے ہیں، ان سب کی مرحلے وار انسپیکشن ہوگی، ان کے ہر پرزے اور مشینری کی جانچ پڑتال کی جائے گی، مینوئل اور مشین دونوں کی مدد سے یہ چیکنگ ہوگی‘۔

سول ایوی ایشن کی جانب سے طیاروں کی انسپیکشن صرف کراچی ایئرپورٹ پر کی جائیگی۔ ادارے کے ترجمان کے مطابق سول ایوی ایشن اور ایئر لائین کے صدر دفتر کراچی میں ہیں اس لیے یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔

دوسری جانب نجی ایئر لائینز کا کہنا ہے کہ حکومتی فیصلے کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ شاہین ایئر کے جنرل مئنیجر نے بی بی سی کو بتایا کہ تین کیٹگری میں طیاروں کی اسنپیکشن ہوتی ہے جو پرواز کے دورانیے پر منحصر ہوتاہے۔

طیارے کی روانگی اور آمد کے وقت کمپنی کے انجنیئر اور سول ایوی ایشن اتھارٹی دونوں اپنے اپنے طور پر طیارے کی کارکردگی اور مشنری کی جانچ پڑتال کرتے ہیں۔

انہوں نے یہ بتانے سے گریز کیا کہ طیاروں کے معائنے کا عمل کب تک مکمل ہوگا۔

وزیردفاع چودھری احمد مختار نے اسلام آباد کے نواح میں جمعہ کو بھوجا ایئر کے طیارے کے حادثے اور اتوار کو کراچی اور لاہور میں شاہین ایئر کے طیاروں میں فنی خرابی کی اطلاعات کے بعد تمام طیاروں کے معائنے کی ہدایات جاری کی تھیں۔

وزیر دفاع چودھری احمد مختار نے کہا تھا کہ ماہرین ان طیاروں کا معائنہ اسی طرح کریں گے جس طرح قومی ائیر لائن یعنی پی آئی اے کے طیاروں کی چانچ پڑتال کی جاتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کوئی ایسا خطرہ مول نہیں لیا جا سکتا کہ جہاز میں کوئی خرابی ہو اور اس سے جانی نقصان ہوجائے۔ ان کا کہنا تھا کہ سول ایوسی ایشن اپنا کام کررہی ہے اور جن طیاروں کا معانئہ مکمل ہوجائے گا انہیں اڑنے کی اجازت مل جائے گی۔

اسی بارے میں