’امریکہ پاکستان کو قربانی کا بکرا بنارہا ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کیا افغانستان میں طالبان کا خاتمہ ہوگیا ہے: پاکستانی فوجی کمانڈر کا سوال

پاکستانی فوج کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل خالد ربانی نے امریکہ پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ افغانستان میں اپنی ناکامیوں پر پاکستان کو قربانی کا بکرا بنانا چاہتا ہے۔

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں لیفٹیننٹ جنرل خالد ربانی نے خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹیڈ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی جانب سے افغانستان میں شدت پسندوں کے ساتھ مذاکرات کرنے کی صورت میں پاکستان سے اس کی سرزمین پر تمام شدت پسندوں کے خلاف کارروائیاں کرنے کی توقع نہ رکھی جائے۔

کور کمانڈر پشاور لیفٹینٹ جنرل خالد ربانی نے کہا: ’وہ (امریکہ) اپنی انگلیاں ہم پر کیوں اٹھاتے ہیں؟ یہ تو اپنا قصور کسی اور پر ڈالنا ہے۔‘

لیفٹیننٹ جنرل خالد ربانی کا کہنا تھا ’کیا افغانستان میں طالبان کا خاتمہ ہوگیا ہے؟ وہاں لاکھوں طالبان ہیں!‘

واضح رہے کہ پاکستانی فوج کے کمانڈر کا یہ بیان ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب گزشتہ روز پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں شدت پسندوں نے تیرہ پاکستانی فوجیوں کا سر قلم کر دیا تھا۔

امریکہ اور نیٹو افواج کا یہ موقف ہے کہ پاکستان شمالی وزیرستان میں پاکستان اور افغانستان کی سرحد پر تمام شدت پسند گروہوں کو نشانہ بنائے۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستانی سرزمین پر افغان شدت پسندوں کو برداشت کرنے یا ان کی حمایت کرنے سے افغانستان میں غیر ملکی فوجوں کے خلاف کارروائیوں کو روکنے میں انہیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

جنرل ربانی نے کہا ’امریکہ اور نیٹو افواج، افغانستان میں شدت پسندوں سے امن معاہدے کرنے کے لیے تعاون کر رہی ہے۔ اگر سرحد کے اس پار بھی یہی حقیقت ہے تو پھر ہماری لیے ایسا کرنا کیوں ممنوع ہے؟‘

یاد رہے کہ گزشتہ نومبر افغان سرحد کے ساتھ پاکستانی فوجی چوکی پر نیٹو افواج کے حملے میں چوبیس پاکستانی فوجی ہلاک ہو گئے تھے جس کے بعد پاکستان اور امریکہ کے درمیان سفارتی تعلقات کشیدگی کا شکار ہو گئے تھے۔

اس حملے پر شدید غصے کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان نے امریکہ سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا تھا اور افغانستان میں تعینات نیٹو افواج کے لیے اپنے زمینی راستے بند کر دیے تھے۔ تاہم نیٹو اور امریکہ نے تفتیش کے بعد اس حملے کو غلط فہمی پر مبنی قرار دے کر معافی مانگنے سے انکار کر دیا تھا۔

اسی بارے میں