’پاک بھارت اقتصادی کانفرنس ایک سازش‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

دفاع پاکستان کونسل میں شامل تنظیم جماعت الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ حل کیے بغیر بھارت سے تجارت ممکن نہیں ہے۔

دفاع پاکستان کونسل نے لاہور میں ہونے والی دو روزہ پاک بھارت اقتصادی کانفرنس کے خلاف منگل کو مظاہرہ کیا۔

یہ مظاہرہ لاہور پریس کلب کے باہر ہوا جس میں جماعت الدعوۃ کے کارکنوں نے شرکت کی۔

احتجاجی مظاہرے میں شامل افراد نے لاہور میں ہونے والی اس دو روزہ اقتصادی کانفرنس کے خلاف کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر ’بھارت سے یاری پاکستان سے غداری‘ اور ’تجارت نہیں کشمیر کی آزادی‘ ْ جیسی عبارتیں درج تھیں۔

جماعت الدعوۃ کے امیر حافظ سعید نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاک بھارت اقتصادی کانفرنس ایک سازش ہے جس کا مقصد خطے میں بھارت کی بالادستی قائم کرنا اور اسے نمبردار بنانا ہے۔

لاہور سے بی بی سی کے نامہ نگار عباد الحق کے مطابق جماعت الدعوۃ کے سربراہ نے وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے نان سٹیٹ ایکٹرز کو روکنے اور امن کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے بیان پر نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ ایسی بات کرنے والے سٹیٹ ایکٹرز کو اپنے کردار پر بھی نظر ڈالنی چاہیے۔

حافظ سعید نے مسلم لیگ نون کے قائد نواز شریف کی جانب سے بھارتی صنعت کاروں کا استقبال کرنے اور تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی اقتصادی کانفرنس میں شرکت کرنے پر انہیں تنقید کا نشانہ بنایا۔

جماعت الدعوۃ کے امیر نے کہا کہ اگر نواز شریف اور عمران خان اس سازش کا حصہ بنیں گے تو عوام انہیں مسترد کردیں گے۔

حافظ سعید کے مطابق امریکہ ان کے سر کی قیمت مقرر کر کے انہیں خاموش نہیں کرا سکتا۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت اور امریکہ چار برسوں سے ان کے خلاف ثبوت تلاش کر رہے ہیں لیکن انہیں ابھی تک کچھ نہیں ملا اور نہ ہی آئندہ کچھ ملےگا۔

حافظ سعید نے کہا کہ اگر امریکہ اور بھارت ان کے خلاف ثبوتوں کو عالمی عدالت انصاف میں لے کر گئے تو وہ وہاں بھی ان الزامات کا سامنا کریں گے۔

اسی بارے میں