کوئٹہ میں فائرنگ، دو سگے بھائی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption واقعہ کے بعد پولیس اور فرنٹیئر کور کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ہزارہ قبیلے سے تعلق رکھنے والے دو افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ہلاک ہونے والوں کا تعلق شیعہ مسلک سے ہے۔

کوئٹہ سے بی بی سی کے نامہ نگار ایوب ترین کے مطابق منگل کی صبح جوائنٹ روڈ پر پاسپورٹ آفس کے سامنے نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کے دو سگے بھائیوں محمد طاہر اور محمد قادر کو اس وقت ہلاک کردیا جب وہ پاسپورٹ بنانے کے لیے لمبی قطار میں کھڑے تھے۔

فائرنگ کے بعد نامعلوم ملزمان موٹرسائیکل پر فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

واقعہ کے بعد پولیس اور فرنٹیئر کور کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی اور پاسپورٹ آفس کو بند کرکے تحقیقات شروع کر دیں لیکن آخری اطلاع تک کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی تھی اور نہ کسی تنظیم یا فرد نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

فائرنگ میں ہلاک ہونے والے دونوں بھا ئیوں کا تعلق ہزارہ قبیلے اور شیعہ مسلک سے ہے اور ان کی لاشیں بعد میں نیچاری امام بارگاہ پہنچا دی گئیں۔

اس واقعے پر ہزارہ قبیلے کے مختلف تنظیموں کی شدید احتجاج بھی کیاہے اور کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے پاسپورٹ آفس کے سامنے سکیورٹی کے انتظامات نہ ہونے کے باعث یہ واقعہ پیش آیاہے۔

اعزاد اری کونسل پاکستان کے صدر رحیم جعفری کے مطابق دونوں بھائی ایران جانے کے لیے پاسپورٹ بنوا رہے تھے تاکہ وہ اپنی والدہ کے ہمراہ زیارات کر سکیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ دو ماہ سے کوئٹہ میں ایک بار پھر ہزارہ قبیلے سے تعلق رکھنے والے کئی افراد ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بن چکے ہیں اور سپریم کورٹ کی جانب سے ان واقعات پر تشویش کا اظہار کیے جانے کے باوجود تاحال ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ نہیں رک سکا۔

اسی بارے میں