ڈیرہ مراد جمالی بم دھماکہ، چار افراد زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption دھماکے کی ذمہ داری بلوچ ری پبلیکن آرمی نے قبول کر لی ہے۔

بلوچستان کے علاقے ڈیرہ مراد جمالی میں ایک بم حملے میں دو پولیس اہلکاروں سمیت چار افراد زخمی ہوئے ہیں جبکہ دھماکے سے پولیس کی ایک گاڑی بھی تباہ ہوگئی۔

ڈیرہ مراد جمالی کے علاقے میر حسن میں بدھ کی دوپہر اس وقت پولیس کی گاڑی کے قریب بم دھماکہ ہوا جب پولیس قیدیوں کو عدالت میں پیش کرنے کے بعد ڈیرہ مراد جمالی سے میر حسن لے جا رہی تھی۔

دھماکے کے نتیجے میں دو پولیس اہلکاروں سمیت چار افراد زخمی ہوئے ہیں جنہیں فوری طور پر سول ہسپتال ڈیرہ مراد جمالی منتقل کردیاگیا۔ پولیس کے مطابق دھماکہ سڑک کے کنارے نصب ریمورٹ کنٹرول بم سے ہوا۔

دوسری جانب دو روز قبل کوئٹہ کے عالمو چوک پر ہونے والے دھماکے میں زخمی ہونے والے شخص زخموں کی تاب نہ لا کرہسپتال میں چل بسے۔ اس کے بعد اس واقعے میں ہلاکتوں کی تعداد پانچ ہو گئی ہے۔

ادھر بلوچ ریپبلیکن آرمی کے ترجمان سرباز بلوچ نےکوئٹہ اور ڈیرہ مراد جمالی کے دھماکوں کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

سرباز بلوچ کے مطابق بلوچ مزاحمت کاروں نے کل رات جعفرآباد کے علاقے اوچ میں ایف سی کے کیمپ پر حملے میں دو ایف سی اہلکاروں کو ہلاک کیا ہے تاہم کوئٹہ میں ایف سی ذرائع نے اسکی تردید کی۔

اسی بارے میں